امریکی محکمہ خزانہ کے ادارے نے 44 بھارتی بینکوں کے منی لانڈرنگ میں ملوث ہونے کو بے نقاب کر دیا

Share this story

پاک جرگہ (ویب ڈیسک) امریکی ادارے فنانشل کرائمز انفورسمنٹ نیٹ ورک نے 44 بھارتی بینکوں کے ایک ارب53کروڑ ڈالرز کی منی لانڈرنگ میں ملوث ہونے کا انکشاف کیا ہے۔

امریکی ادارے کے مطابق منی لانڈرنگ تین ہزار دوسو ایک مشکوک ٹرانزیکشنز کے ذریعے کی گئی۔

امریکی ادارے نے ایک رپورٹ میں انکشاف کیا کہ بھارتی بینکوں کی طرف سے 2011 تا2017 ء منی لانڈرنگ کرنے کے علاوہ دہشت گردوں کو سہولیات فراہم کی گئیں۔ امریکی بینکوں نے مختلف اداروں اور شخصیات کی طرف سے کی جانے والی مشکوک ٹرانزیکشنز کے خلاف ایک رپورٹ پیش کی ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بھارت کے علاوہ انڈین پریمیئر لیگ میں بھی منی لانڈرنگ کی گئی۔

بھارتی بینکوں نے مبینہ طور پر منی لانڈرنگ کرنے والوں کو ان کے غلط کاموں کیلئے سونے اور ہیروں کے ذریعے سہولیات فراہم کیں۔

رپورٹ میں فنڈز کی منتقلی اور اس کے استعمال کے حوالے سے بھی تشویش کا اظہار کیا گیا جب اقوام متحدہ کی رپورٹ میں بھارت میں کیرالہ اور آسام کی بینکوں کی فہرست میں دہشت گرد گروپوں کی موجودگی کی نشاندہی کی۔

واضح رہے کہ امریکی ادارے نے 1999 ء اور 2017 ء کے درمیان دو کھرب ڈالرز کی ٹرانزیکشنز کے ذریعے کی جاے والی منی لانڈرنگ کا پتا لگایا۔

Share this story

Leave a Reply