اے پی سی کا مقصد حزب اختلاف کے رہنماؤں کیخلاف بدعنوانی کےمقدمات ختم کرانےکی ایک کوشش ہے،وزیراطلاعات

Share this story

پاک جرگہ (ویب ڈیسک) وزیر اطلاعات و نشریات شبلی فراز نے کہا ہے کہ آج کی آل پارٹیز کانفرنس کا مقصد اپوزیشن کے خلاف بدعنوانی کے مقدمات کو ختم کرانا تھا۔

پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما نوازشریف کی قومی اداروں اور پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کے خلاف الزام تراشی کے بارے میں ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پوری قوم اپوزیشن کی بری پالیسیوں کی قیمت ادا کررہی ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ نواز شریف کی تقریر ایف اے ٹی ایف بل کے خلاف ان کے عزائم کو ظاہر کرتی ہے انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی تقریر میں اداروں کے خلاف مہم بھی عیاں تھی۔

انہوں نے کہا کہ اداروں کو نواز شریف کی تقریر کا نوٹس لینا چاہیے۔

شبلی فراز نے کہا کہ نواز شریف بیرون ملک بیٹھ کر ملکی قوانین کی دھجیاں اڑا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان سے منی ٹریل کی بابت معلوم کرنے کی بجائے نواز شریف کو چاہیے کہ وہ عدالت کے روبرو پیش ہوں۔

انہوں نے کہا کہ اگر نواز شریف ملک سے مخلص ہیں تو انہیں چاہیے کہ وہ اپنی بیرون ممالک میں موجود اربوں روپے مالیت کی جائیداد فروخت کرکے ملک آئیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے اپنی چالیس سال کی مکمل منی ٹریل پیش کر دی ہے اور عدالت عظمیٰ نے انہیں ایمانداراور امانت دار قرار دیاہے۔

حزب اختلاف کے خلاف قومی احتساب بیورو کے مقدمات کے بارے میں شبلی فراز نے کہا کہ قومی احتساب بیورو کے چیئرمین کو حزب اختلاف کی جماعتوں سے مشاورت کے ساتھ مشترکہ طور پر اس وقت تعینات کیا گیا تھا جب نوازشریف حکومت میں تھے اور اس نے نیب کے قانون کو ختم یا تبدیل نہیں کیا ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ جیسے جیسے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے لیڈر کے خلاف مقدمات کا اندراج کیا گیا تو انہوں نے شور شرابا شروع کر دیا۔

شبلی فراز نے کہا کہ نوازشریف صحت مند نظر آ رہے تھے اور یہ بات بالکل واضح ہے کہ ان کی بیماری کا ڈرامہ انہیں بیرون ملک بھجوانے کیلئے رچایاگیا تھا۔

ذرائع ابلاغ کی آزادی کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے میڈیا کے خلاف کوئی کارروائی نہ کرنے کی واضح ہدایات دی ہیں اور یہ بہت اچھی بات ہے کہ نوازشریف نے براہ راست تقریر کی اور وہ بے نقاب ہو گئے ہیں۔

Share this story

Leave a Reply