بھارتی ہندوتوا نظریات سے پورے خطے کو خطرہ لاحق ہے، وزیرخارجہ

Share this story

ویب ڈیسک –  صدر ڈاکٹر عارف علوی نے عالمی برادری سے اپیل کی ہے کہ وہ غیر قانونی مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارتی ظلم و ستم کا نوٹس لیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے بین پارلیمانی یونین کی صدر گیبریلا کییوس بیرن سے گفتگو کرتے ہوئے کیا جنہوں نے آج (پیر) کو اسلام آباد میں ان سے ملاقات کی۔

صدر ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ غیرقانونی طور پر بھارتی زیرتسلط کشمیر کے نہتے شہری انتہائی بدحالی کا شکار ہیں کیونکہ ہندوستان نے بے گناہ لوگوں کے خلاف دہشت گردی کا بازار گرم کررکھا ہے ، جو اقوام متحدہ کی قراردادوں کی صریح خلاف ورزی ہے۔

انہوں نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ IPU مقبوضہ جموں و کشمیر کے لوگوں کے حقوق کے تحفظ کے لئے اپنا کردار ادا کرے گا۔

اس موقع پر گیبریلا کییوس بیرن ، جو میکسیکو کی سینیٹر بھی ہیں ، نے کہا کہ ان کا ملک باہمی دلچسپی کے شعبوں میں قریبی تعلقات کو فروغ دینے کے لئے پاکستان کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہتا ہے۔

دونوں فریقوں نے پاکستان اور میکسیکو کے عوام کے باہمی فائدے کے لئے تمام شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کو مزید مستحکم کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

صدر نے اس امید کا اظہار کیا کہ IPU کی صدر کا دورہ پاکستان، پارلیمنٹ اور آئی پی یو کے ممبران کے مابین پارلیمانی تعلقات کو مستحکم کرنے میں معاون ثابت ہوگا۔

اجلاس میں چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی ، اور سینیٹر مرزا محمد آفریدی نے بھی شرکت کی۔

دوسری جانب  وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بین الپارلیمانی یونین کی صدر گیبریلا کیو یس بیرن سے پیر کے روز دفتر خارجہ اسلام آباد میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کے ہندوتوا نظریات اور غیرقانونی طور پر بھارت کے زیرتسلط کشمیر میں یکطرفہ غیرقانونی اقدامات پورے خطے کے لئے خطرہ ہیں۔ 

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کا پرامن حل چاہتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ غیرقانونی طور پر بھارتی زیرتسلط کشمیر کے نہتے شہری گزشتہ ایک سال سے کرفیو کی صورت میں بھارتی مظالم سہہ رہے ہیں۔

وزیر خارجہ نے بین الپارلیمانی یونین اور عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ نہتے کشمیریوں کو ان کا آئینی حق حق خوادرادیت دلانے اور بھارتی جبرواستبداد سے بچانے کیلئے آگے بڑھیں۔

وزیر خارجہ نے بین الپارلیمانی یونین کے پلیٹ فارم سے دنیا بھر میں پارلیمنٹ کی بالادستی کے حوالے سے گیبریلا کیو یس بیرن کی خدمات کو سراہا۔

اس سے قبل بین الپارلیمانی یونین کی صدر گیبریلا کیو یس بیرن نے بھی چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی سے ملاقات کی۔

چیئرمین سینیٹ نے ان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مذاکرات کے ذریعے تنازعات کے حل اور ترقی پر یقین رکھتا ہے اور بین الپارلیمانی امور کی یونین اپنے رکن ممالک کو تنازعات کے حل کیلئے مذاکرات کا موقع فراہم کرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان خطے کے امن کیلئے کوشاں ہے اور ترقی کی جانب سفر پاکستان اور بین الپارلیمانی یونین کا مشترکہ ایجنڈا ہے۔

بین الپارلیمانی امور کی یونین کے صدر نے باہمی رابطوں کے فروغ کیلئے مل کر کام کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔

Share this story

Leave a Reply