بھارت نے سکھوں کو بابا گرونانک کی برسی کی تقریبات میں شرکت سے روک دیا

Share this story

File Photo

دفترخارجہ نے کرتار پور راہداری سے سکھوں کے پاکستان آنے سے متعلق دو خطوط لکھے لیکن بھارت نے کوئی جواب نہ دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) دنیا کے سب سے بڑی جمہوریہ کے دعویدار بھارت کے سیکولرازم کا بھانڈا پھوٹ گیا۔

ہندوتوا کے پرچار نام نہاد سکیولر ملک بھارت نے پھر روایتی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے سکھوں کو بابا گرونانک کی برسی کی تقریبات میں شرکت سے روک دیا۔

شکر گڑھ کرتارپور میں بابا گورو نانک دیو جی کی 481 ویں برسی کی تقریبات کا آج آخری روز ہے، بھارت نے روایتی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے سکھوں کو بابا گورو نانک کی برسی کی تقریبات میں شرکت سے روک دیا۔

 دنیا کی سب سے بڑی جمہوریہ کا نام نہاد دعویدار بھارت روایتی ہٹ دھرمی برقرار رکھے ہوئے ہے، مودی کے بھارت نے سکھ برادری کو بابا گورونانک دیو جی کی برسی کی تقریبات میں شرکت کیلئے کرتار پور آنے سے روک دیا، پاکستان نے انسداد کورونا انتظامات مکمل کر کے بھارت کو کرتارپور راہداری کھولنے کیلئے 27 جون اور 27 اگست کو دو خطوط بھی لکھے، لیکن بھارت نے کوئی جواب نہیں دیا۔

بابا گورونانک کی برسی کی تقریبات کے تیسرے روز نگر کیرتن، دربار کیرتن میں شرکت کے لئے پاکستان اور دیگر ممالک سے یاتریوں کی بڑی تعداد کرتار پور پہنچ چکی ہے، یاتری روایتی عبادات ارداس میں شرکت، متبرکات کی زیارت کے ساتھ ساتھ بھارتی سرحد تک نگر کیرتن کا جلوس بھی نکالیں گے۔

Share this story

Leave a Reply