تحریک لبیک فیض آباد دھرنا ختم کرنے پر آمادہ، حکومت کا دعویٰ

Share this story

حکومت کی جانب سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ تحریک لبیک پاکستان نے دارالحکومت اسلام آباد اور جڑواں شہر راولپنڈی کے سنگم پر فیض آباد میں جاری دھرنا ختم کرنے ہر آمادگی ظاہر کر دی ہے۔

اردو نیوز کے مطابق پیر کی شب وزارت مذہبی امور اور بین المذاہب ہم آہنگی کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق ’حکومت اور تحریک لبیک کے درمیان مذاکرات کامیاب ہونے کے بعد مذہبی جماعت کی قیادت نے دھرنا ختم کرنے پر آمادگی ظاہر کر دی ہے۔‘

ترجمان وزارت مذہبی امور نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ’مذہبی جماعت کے ساتھ مذاکرات کے لیے وزیر اعظم عمران خان نے پیر کی شام کو کمیٹی قائم کی تھی جس کی سربراہی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری کر رہے تھے۔‘

انہوں نے بتایا کہ ’مذہبی جماعت کے ساتھ ہونے والے مذاکرات میں مطالبات کے حوالے سے تحریک لبیک کے ساتھ ایک معاہدہ طے پایا ہے جس کا اعلان کچھ دیر بعد مذہبی جماعت کی قیادت خود اعلان کرے گی۔‘

تاہم تحریک لبیک کی قیادت کی جانب سے تاحال کوئی بیان سامنے نہیں آیا ہے۔

مذہبی جماعت کے ساتھ مذاکرات میں وزیر داخلہ سید اعجاز شاہ ، کمشنر اسلام آباد عامر احمد علی، مشیر داخلہ شہزاد اکبر اور سیکرٹری داخلہ حکومتی ٹیم میں شامل تھے۔ 

خیال رہے کہ فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف مذہبی جماعت تحریک لبیک پاکستان نے اتوار کو لیاقت باغ راولپنڈی سے فیض آباد تک ریلی نکالی جو کہ فیض آباد پہنچنے کے بعد دھرنے میں تبدیل ہو گئی تھی۔ 

انتظامیہ کی جانب سے وفاقی دارلحکومت اسلام آباد کو راولپنڈی سے ملانے والے راستوں پر کنٹینرز لگا کر بند کر دیا تھا جبکہ اتوار سے جڑواں شہروں میں موبائل اور انٹرنیٹ سروس بھی معطل ہے۔

Share this story

Leave a Reply