جموں و کشمیر کے عوام حق خودارادیت کی منصفانہ جدوجہد میں تنہا نہیں ہیں،وزیرخارجہ

Share this story

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ملک کی سول اور فوجی قیادت اور سیاسی جماعتوں کا مسئلہ کشمیر کے حل کے حوالے سے یکساں موقف ہے ۔

انہوں نے یہ بات پیر کے روز کنٹرول لائن کے ساتھ مقیم لوگوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کشمیر کے سفیر کی حیثیت سے ہرفورم پرکشمیریوں کا مقدمہ لڑرہے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ ہم عالمی ضمیر جھنجھوڑنے کیلئے کشمیریوں کے جذبات کی نمائندگی کریں گے۔

شاہ محمود قریشی نے کہاکہ بھارت یہ غلط تاثر دینے کی کوشش کررہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں صورتحال معمول کے مطابق ہے ۔

انہوں نے کہاکہ اگر حالات ٹھیک ہیں تو وہاں مساجد کو کھولا جائے ۔

انہوں نے کہاکہ بھارت نے مقبوضہ علاقے میں نو لاکھ فوج تعینات کررکھی ہے ۔

وزیرخارجہ نے کہاکہ کشمیر ہائی وے کو اب سری نگر ہائی وے کہاجائے گا کیونکہ سری نگر ہماری منزل ہے۔

انہوں نے کہاکہ وہ دن دور نہیں جب جذبہ آزادی سے سرشار کشمیری سری نگر کی جامع مسجد میں خصوصی نماز ادا کریں گے۔

اس سے پہلے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی ، وزیردفاع پرویز خٹک اور قومی سلامتی کے بارے میں وزیراعظم کے معاون خصوصی معید یوسف نے آزادکشمیر میں کنٹرول لائن کے چڑی کوٹ سیکٹر کا دورہ کیا ۔

 

غیرملکی ذرائع ابلاغ کے نمائندے بھی وفد کے ہمراہ تھے عسکری حکام نے انھیں کنٹرول لائن پربھارتی فورسز کی طرف سے جاری جنگ بندی کی خلاف ورزیوں اور مسلسل فائرنگ سے شہریوں کے جانی ومالی نقصان سے متعلق بریفنگ دی ۔

روانگی سے قبل وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ کشمیریوں نے پانچ اگست کا غیرقانونی بھارتی اقدام مستردکردیا ہے اوروہ حق خودارادیت کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔

انہوں نے کہاکہ کنٹرول لائن کے دورے کا مقصد مظلوم کشمیریوں اور ان کے اہل خانہ سے اظہار یکجہتی کرنا ہے جنھیں بھارتی مظالم اور بلااشتعال فائرنگ کا سامنا ہے ۔

شاہ محمود قریشی نے کہاکہ ہم یقین دلانا چاہتے ہیں کہ پاک فوج ، پاکستانی قیادت اور پوری پاکستانی قوم کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہے۔

دریں اثنا وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے مظفرآباد میں کل جماعتی کانفرنس میں بھی شرکت کی جس میں آزادکشمیر کی سیاسی جماعتیں شریک تھیں۔

اجلاس میں تحریک انصاف ، مسلم کانفرنس، جماعت اسلامی ، پاکستان پیپلزپارٹی ، پاکستان مسلم لیگ نون اور دیگر سیاسی جماعتوں نے شرکت کی ۔

اجلاس میں پانچ اگست کے بارے میں بات چیت کی گئی ۔

Share this story

Leave a Reply