حکومت کی جانب سے تعلیمی اداروں، سیاحتی مقامات اور ہوٹلز کو کھولنے کا اعلان

Share this story

وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی وبا پر حکومتی اداروں کی موثر حکمت عملی سے بڑی حد تک قابو پا لیا گیا ہے۔

انہوں نے قومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کورونا کے خاتمے میں حقیقی ہیرو پاکستانی عوام ہیں جنہوں نے کورونا کے پھیلاؤ کی روک تھام کے لئے ضابطہ کار پر سختی سے عمل کیا ہے انہوں نے بیماری کے خلاف صف اول کا کردار ادا کرنے والے ڈاکٹروں اور معاون طبی عملے کی انتھک کوششوں کو سراہا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سمارٹ لاک ڈاؤن کی حکمت عملی کو دیگر ممالک نے سراہا ہے اور وہ بھی پاکستان کے تجربے سے سیکھ رہے ہیں۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ 7 ستمبر کو وزارت تعلیم کے حتمی جائزے کے بعد تمام تعلیمی ادارے 15 ستمبر کو کھول دیئے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہوٹلوں اور ریستورانوں سمیت ہال اور مہمان داری کے شعبے بھی کھول دیئے جائیں گے جبکہ سیاحتی سیکٹر ہفتے کو فعال کر دیا جائے گا۔

اسد عمر نے کہا کہ پیر سے گھروں میں اور گھروں سے باہر ایسے کھیل جن میں سماجی فاصلہ برقرار رکھا جاسکے کھیلنے کی اجازت دے دی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ پہلے سے آپریشنل ریل گاڑیوں اور پروازوں سے پابندی اکتوبر میں ہٹائی جائیگی جبکہ مسافروں کو میٹروبس میں کھڑے ہو کر سفر کی اجازت نہیں ہو گی۔

اسدعمر نے کہا کہ شادی ہال 15ستمبر سے جبکہ بیوٹی پارلر پیر سے کھول دیئے جائیں گے۔

اسدعمر نے کہا کہ محرم الحرام سے متعلق ایس او پیز علمائے کرام کی مشاورت سے تیار کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام دکانوں اور کاروباری سرگرمیوں کو معمول کے اوقات کار کے مطابق کام کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔

Share this story

Leave a Reply