خدمات کا صلہ یا وقت کی ضرورت، بپن راوت انڈیا کے پہلے چیف آف ڈیفنس سٹاف مقرر

Share this story

انڈیا نے تاریخ میں پہلی دفعہ آرمڈ فورسز چین آف کمانڈ میں بڑی تبدیلی لاتے ہوئے، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کا عہدہ ختم کر کے اسکی جگہ چیف آف ڈیفنس سٹاف کا تقرر کیا ہے

جنرل بپن راوت کی تقرری نے انڈیا کے فوجی اور سیاسی حلقوں میں ہلچل مچا دی ہے اسکی بڑی وجہ جنرل راوت کی متنازع شخصیت اور بیانات ہیں

جنرل راوت نے 16 دسمبر 1978 کو 5 گورکھا رائفلز کی گیارویں بٹالین میں کمیشن حاصل کیا، نیشنل ڈیفنس اکیڈمی، اور فورٹ لیون نارتھ کے گریجویٹ جنرل راوت ایک ریٹائرڈ لیفٹننٹ جنرل کے بیٹے ہیں

31 دسمبر 2016 کو مودی حکومت نے پہلی دفعہ دو سینئر لیفٹننٹ جنرلز کو نظر انداز کرتے ہوئے جنرل راوت کو آرمی کی کمانڈ دی تھی

جنرل راوت بحیثیت آرمی چیف انڈیا میں بھی متنازع رہے، اڑی حملے کے بعد پیدا ہونے والی صورت حال بپن راوت کو ورثے میں ملی، لیکن انکے دور کی بڑی ناکامی پلوامہ حملہ تھی جہاں انڈین پیرا ملٹری کے چالیس جوان مارے گئے تھے

انڈیا میں جنرل راوت کو ایک سیاسی کٹھ پتلی کہا جاتا ہے جو سیاسی حکومت کے جائز نا جائز ہر حکم پر بلا چوں چراں عمل کرتے ہیں اپوزیشن کو جنرل راوت سے سیاسی معاملات میں مداخلت اور بیان بازی کا گلہ ہے، گزشتہ دنوں شہریت بل احتجاج پر بیان بازی کی وجہ سے کانگرس نے جنرل کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا

کہا یہ جا رہا ہے کہ چیف آف ڈیفنس سٹاف انڈین آرمڈ فورسز کا طاقتور ترین عہدہ ہوگا، گو کہ انڈیا میں کارگل جنگ کے بعد تینوں افواج میں رابطہ بہتر بنانے کے لئے اس عہدہ کی ضرورت محسوس کی جا رہی تھی مگر ایک عرصہ سے التوا کا شکار یہ کام مودی حکومت نے کر دیا ہے

دفاعی تجزیہ نگار یہ بات محسوس کر رہے ہیں کہ چیف آف ڈیفنس سٹاف بن کر جنرل راوت کے مزاج میں اور بھی تیزی آئے گی کیوں کہ اب تینوں مسلح افواج انکی زیر کمانڈ ہوں گی

لیکن سوال یہ ہے کہ تین درجن کے قریب لیفٹننٹ جنرلز ہونے کے باوجود یہ عہدہ ریٹائر ہونے والے جنرل کے لئے ہی کیوں؟ اسکی وجہ بڑی سادہ ہے جنرل راوت نے ہر وہ کام بنا سوچے سمجھے کیا جسکا حکم مودی سرکار نے دیا اور اب یہ کہا جا رہا ہے انڈین فوج کو BJP فوج بنانے میں سب سے بڑا ہاتھ جنرل راوت کا ہے،

پاکستان اور انڈیا کے سرحدی مسائل اس وقت گھمبیر ہیں خصوصاً لائن آف کنٹرول پر اور جنرل راوت کی تعیناتی کے بعد یہ مسائل بڑھیں گے یا حل ہوں گے اسکا جواب چند روز میں مل جائے گا

Share this story

Leave a Reply