پاکستان نے بھارتی ریاستی دہشتگردی کا معاملہ اقوام متحدہ میں اٹھا دیا

Share this story

 اسلام آباد / نیو یارک: پاکستان سفیر منیر اکرم نے بھارتی ریاستی دہشتگردی کا معاملہ اقوام متحدہ میں اٹھا دیا۔

دفترخارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق اقوام متحدہ میں انسداد دہشتگردی کا ہفتہ منایا جا رہا ہے اور پاکستان نے ایک بار پھر بھارتی ریاستی دہشتگردی کا معاملہ اقوام متحدہ میں اٹھا دیا ہے۔

ایکسپرس نیوز کے مطابق  پاکستان کی جانب سے سفیر منیر اکرم نے اقوام متحدہ میں انسداد دہشتگردی کے موضوع پر تقریر کرتے ہوئے بھارتی ریاستی دہشت گردی کا پول کھول دیا اور بتایا کہ بھارت پاکستان میں دہشت گردی کیلئے دہشت گرد گروپوں کی اعانت کر رہا ہے، بھارت پاکستان اسٹاک ایکسچینج کراچی حملے میں ملوث تھا، کراچی میں چین کے قونصلیت کے حملے میں بھی بھارت کا ہاتھ تھا، بھارتی ریاستی دہشت گردی سے پاکستانی سلامتی کو سخت خطرات لاحق ہیں، اقوام متحدہ بھارتی کی جانب سے پاکستان کے خلاف دہشتگردی کے خطرات کا فوری نوٹس لے۔

پاکستانی سفیر کا کہنا تھا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر کی جدوجہد آزادی کو دہشتگردی کا غلط رنگ دے رہا ہے، وادی میں بھارتی فوج کشمیریوں پر انسانی سوز مظالم ڈھا رہی ہیں، بھارتی مظالم کشمیریوں کے حوصلے کو غیر متزلل نہیں کر سکتے۔

منیر اکرم نے کہا کہ بھارت میں اسلام فوبیا عروج پر ہے، رواں سال فروری میں نئی دلی کے مسلم کش فسادات اسلامو فوبیا کی واضح مثال ہیں، بی جے پی کی حکومت آر ایس ایس کے ہندوتوا کے انتہا پسند نظرئے پر عمل پیرا ہے، بھارت میں مسلمانوں سمیت دیگر اقلیتوں کو دبایا جا رہا ہے۔

پاکستان سفیر کا کہنا تھا کہ بھارتی اقدامات کے باعث ہندستان میں 18 کڑور مسملانوں کی زندگی خطرے میں ہے، شہریت کے قانون میں تبدیلی سے لاکھوں مسلمانوں سے شہریت چھن جانے کا خطرہ ہے، بی جے پی اور آر ایس ایس کی اسلام دشمنی پالیسی نے کورونا کے دوران مزید تقویت پکڑی، بھارتی مسلمانوں پر بھارت میں کورونا پھیلانے کا الزاما لگایا گیا، ہندتوا نظرئے کی انتہا پسندی خود ایک دہشتگردی ہے۔

Share this story

Leave a Reply