چیف جسٹس نے کے الیکٹرک کیخلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا

Share this story

کراچی: چیف جسٹس گلزار احمد نے کے الیکٹرک کیخلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا۔ عدالت نے سی ای او مونس علوی کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کے الیکٹرک کا آڈٹ بھی کیا جائے۔

دنیا نیوز کے مطابق   چیف جسٹس پاکستان نے کراچی میں لوڈ شیڈنگ پر برہمی کا اظہار کیا۔ وکیل کے الیکٹرک نے عدالت کو بتایا کہ لوڈ شیڈنگ کی سب سے بڑی وجہ بجلی چوری ہے جس پر چیف جسٹس نے استفسار کیا آپ یہ بتانے آئے ہیں کہ لوڈشیڈنگ چوری کی وجہ سے ہو رہی ہے، اب تک بجلی چوروں کے خلاف کارروائی کیوں نہیں کی۔

چیف جسٹس نے کہا آئندہ آپ کے منہ سے یہ بات نہ سنوں، شہر میں ایک منٹ کی لوڈ شیڈنگ نہیں ہونی چاہیے، میں ابھی کے الیکٹرک کا لائسنس معطل کرتا ہوں، چئیرمین نیپرا بتائے کے اس کا متبادل کیا ہے جس پر چئیرمین نیپرا نے کہا میں صورت حال دیکھ کر عدالت کو آگاہ کر سکتا ہوں۔

چیف جسٹس نے چیئرمین نیپرا سے سوال کیا آپ کے الیکٹرک کیخلاف کارروائی کیوں نہیں کرتے، نیپرا نے جواب دیا کارروائی کرتے ہیں لیکن کے الیکٹرک نے سٹے حاصل کر رکھے ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا آپ سارا ریکارڈ لے کر آئیں ہم سٹے ختم کر دیتے ہیں، کرنٹ سے مرنے والوں کی مالی مدد کیسے کرتے ہیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آپ کے ماسٹر جس طرح آپ لوگوں کو ڈیل کرتے ہیں ویسے ہی آپ شہریوں کو ڈیل کرتے ہیں، بجلی بند نہیں ہوگی اگر ہوگی تو آپ کے گھروں اور دفاتر کی ہوگی۔

عدالت نے سی ای او کے الیکٹرک مونس علوی کی سرزنش کی۔ چیف جسٹس نے کہا آپ لوگ صرف باتیں کرتے ہیں، کام نہیں کرنا، تمام وصولیاں کراچی والوں سے کرلی گئیں، کے الیکٹرک کا مکمل آڈٹ ہونا چاہیئے، پتہ چلے کیا کمایا، جہاں جہاں غفلت ہے، مقدمات درج کیے جائیں۔

Share this story

Leave a Reply