ہم نے بہترپالیسیاں بنائی ہیں، آج دنیا تعریف کرتی ہے، وزیراعظم عمران خان

Share this story

وزیراعظم عمران خان نے نسل نو کے مستقبل کے تحفظ کیلئے پاکستان میں جنگلات کی بحالی پر زور دیا ہے۔

پیر کے روز اسلام آباد میں صاف سرسبز اشاریوں پرمبنی حوصلہ افزائی ایوارڈ کے تقسیم کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے10 ارب درخت لگانے کا ہدف مقرر کیا ہے جبکہ ٹھوس فضلہ کا انتظام کر کے اپنے شہروں کو صاف رکھنا ہمارا اگلا ہدف ہے۔

انہوں نے کہا کہ ٹھوس فضلہ سے باقی دنیا کی طرح بجلی پیدا کرنے کیلئے کوششیں جاری ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں ان اہداف کے حصول کیلئے صاف ہوا پانی اور آلودگی کی دیگر صورتوں میں کمی لانی چاہئے۔

ہمیں اپنی ہمسائیگی میں صاف و سرسبز اور آلودگی سے پاک ماحول کو حقیقت کا رنگ دینے کیلئے لوگوں کی ذہنیت کو پہلے تبدیل کرنا ہو گا۔

عمران خان نے موسمیاتی تبدیلی کے چیلنج سے نمٹنے کیلئے جزا اور سزا کا نظام وضع کرنے کا عندیہ دیا۔

انہوں نے کہا کہ صاف و سرسبز پاکستان کی اس تحریک میں جن میں ڈپٹی کمشنر اور دیگر افسران نے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا ان کو انعام ملنا چاہئے اور ان کی سالانہ کارکردگی جائزہ رپورٹ میں اس کا ذکر ہونا چاہئے۔

وزیراعظم نے کہا کہ پورے پاکستان میں گھوما ہوں اور ہر کونہ دیکھا ہے، کسی پاکستان کو ایسے نہیں دیکھا جیسے میں نے دیکھا ہے، پاکستان وہ خوش قسمت ملک ہے جہاں رفاہ عامہ کے کاموں میں بھرپور حصہ لیا جاتا ہے لیکن بدقسمتی سے پاکستانی عوام کے جذبے سے بھرپور فائدہ نہیں اٹھایا جاتا۔

انہوں نے کہا کہ تبدیلی پہلے ذہنوں میں آتی ہے پھر زمینی سطح پر ہوتی ہے، ہمیں عوام کے ذہنوں میں ڈالنا ہے کہ ہریالی ختم کرنے کا مطلب ہم تباہی کررہے ہیں۔

وزیر اعظم عمران خان نے گرین ایوارڈ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ ہم نےبہترپالیسیاں بنائی ہیں، آج دنیا تعریف کرتی ہے،کورونا سے متعلق پالیسی دیکھ لیں، دنیاکہتی ہے پاکستان سے سیکھو،کورونا پالیسی میں وبا پر کنٹرول کیساتھ معاشی لحاظ سے بھی  بہتر قدم اٹھایا۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے موسمیاتی تبدیلی کے بارے میں وزیراعظم کے خصوصی معاون ملک امین اسلم نے کہا کہ موسمیاتی تبدیلی کے انڈیکس میں اٹک اور بنوںضلع نے پنجاب اور خیبرپختونخوا میں پہلی پوزیشن حاصل کی ہے۔

Share this story

Leave a Reply