تبلیغی جماعت کے 20 ہزار لوگوں کو قرنطینہ کردیا گیا،مزید کی تلاش جاری

Share this story

رائیونڈ میں تبلیغی اجتماع میں شرکت کرنے والے ہزاروں افراد میں سے 20 ہزار افراد کو تلاش کرکے قرنطینہ کردیا گیا۔

کورونا وائرس کے خطرے کے باوجود گزشتہ ماہ رائیونڈ میں تبلیغی جماعت کا سالانہ اجتماع منعقد کیا گیا جس میں نہ صرف ملک کے کونے کونے سے بلکہ بیرون ملک سے لوگوں نےشرکت کی تھی، اجتماع ختم ہونے کے بعد تبلیغی جماعتیں ملک بھر میں پھیل گئیں اور ملک کے متعدد شہروں میں کورونا وائر س پھیلانے کا سبب بن گئیں۔

ملک میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہونے کے بعد تبلیغی جماعت کے اراکین میں کورونا کی تصدیق شروع ہوگئی جس کے بعد پورے رائیونڈ سٹی کو سیل کردیا گیا ، اور ملک بھر میں تبلیغی جماعتوں کی تلاش شروع کردی گئی تاکہ کورونا کو مزید پھیلنے سے روکا جاسکے، اس دوران 20 ہزار تبلیغی اراکین کو تلاش کرنے کے بعد قرنطینہ کردیا گیا جبکہ مزید کی تلاش جاری ہے۔

اس سال رائیونڈ کے اجتماع میں چین، انڈونیشیا، نائجیریا اور افغانستان سمیت دیگر مسلمان ممالک سے لوگوں نے شرکت کی، اور ایک اندازے کے مطابق 1 لاکھ سے زائد افراداس اجتماع میں شریک ہوئے ،خیبر پختونخوا حکومت نے اب تک 5ہزار 300 افراد کو تلاش کرکے قرنطینہ کردیا، ترجمان صوبائی حکومت کے مطابق ہمارے صوبے سے ہزاروں افراد اس اجتماع میں شریک ہوئےجن میں سے متعدد لاک ڈاؤن کے باعث دیگر شہروں میں پھنس گئے ہیں۔

پنجاب حکومت کے مطابق جنوبی پنجاب میں 8ہزار جبکہ سینٹرل پنجاب میں 7ہزار تبلیغی اراکین کو قرنطینہ کردیا ہے جبکہ سندھ میں بھی ہزاروں افراد کو تلاش کرکے قرنطینہ کردیا ہے جبکہ مزید کی تلاش جاری ہے۔

پاکستان میں اب تک 3 ہزار سے زائد افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے ، ملک میں زیادہ تعداد میں مریض تفتان کے راستے ایران سے آئے یا پھر رائیونڈ اجتماع سے ملک بھر میں پھیلے جس کی وجہ سے کورونا ملک کے بہت سے شہروں میں پھیل گیا ہے، جبکہ 45 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں

ماہرین کا کہنا ہے کہ ابھی ٹیسٹ کی تعداد محدود ہے جس وجہ سے خدشہ ہے کہ ملک میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد زیادہ ہے لیکن ٹیسٹ نہ ہونے کی وجہ سے تصدیق شدہ کسیز کی تعدا د کم ہے۔

Share this story

Leave a Reply