دبئی میں گلف نیوز کے ایڈیٹر کو بی جے پی کے آئی ٹی سیل اور تصدیق شدہ اکاؤنٹس سے دھمکیاں

Share this story

گلف نیوز ، دبئی کے فیچر ایڈیٹر ، جن پر متحدہ عرب امارات اور خلیجی ممالک میں ہندوستانی شہریوں کی اسلامو فوبک سوشل میڈیا پوسٹوں پر رپورٹنگ کرنے کا الزام ہے ، کو بھارتی سوشل میڈیا صارفین کی طرف سے دھمکیاں مل رہی ہیں۔

دبئی میں گلف نیوز کے ساتھ کام کرنے والے ایک ہندوستانی صحافی کو دھمکی دی گئی ہے کہ اس کا پاسپورٹ ضبط کر لیا جائے گا اور جب وہ ہندوستان واپس آئے گا تو اسے گرفتار بھی کرلیا جائے گا۔ اس کا جرم؟ انہوں نے بظاہر متحدہ عرب امارات اور خلیجی ممالک میں کام کرنے والے ہندوستانی تارکین وطن کی اسلامو فوبک سوشل میڈیا پوسٹوں کو بے نقاب کرنے کی رپورٹس لکھی تھیں۔ ان اطلاعات کی وجہ سے کچھ کیسز  میں پولیس کارروائی ہوئی تھی اور کچھ ہندوستانی تارکین وطن کو مقدمات کا سامنا کرنا پڑا۔

اسپیشل رپورٹس کے نگران، فیچر ایڈیٹر مظہر فاروقی کا کہنا  ہے کہ وہ اپنے میل ، واٹس ایپ ، فیس بک میسنجر اور ٹویٹر پر بھیجے گئے گالیوں اور دھمکی آمیز پیغامات کی زد میں آگئے ہیں۔ انہوں نے یہ دعویٰ بھی کیا کہ کچھ اکاؤنٹ بند  کردیئے گئے ہیں اور کچھ ٹویٹس حذف کردیئے گئے ہیں۔ چند  توثیق شدہ اکاؤنٹس اور کچھ لوگ جنہیں ہندوستانی وزیر اعظم بھی فولو کرتے ہیں،  کے ذریعہ کئی دھمکیاں دی گئیں۔

دھمکیاں واضح تھیں جن میں کچھ اس طرح کے الفاظ ہیں:

آپ کو یہاں سیکیورٹی اداروں کے ذریعہ قریب سے دیکھا جا رہا ہے۔ ہندوستان میں آپ کی مستقبل کی آزادی غیر یقینی ہے۔ اگر آپ یہاں واپس آئے تو آپ کو جیل جانا پڑے گا۔

اس  کی فیملی کہاں رہتی ہے؟ اٹھا لینا چاہئے۔ پاسپورٹ منسوخ ہونا چاہئے

آپ بھی ہماری فہرست میں شامل ہیں اور آپ کی بیٹیاں بھی 

دبئی میں حکام اور پولیس کو یہ پیغامات بھی بھیجے گئے تھے کہ آیا انہوں نے مظہر فاروقی کا  مکمل پس منظر چیک کیا ہے ، جو ان کے بقول لکھنؤ کے شیعہ مسلمان ہیں اور وہ خفیہ طور پر ایران کے لئے کام کر رہے ہیں۔

تبصرہ کرنے کے لئے پوچھے جانے پر ، مظہر فاروقی کا کہنا تھا کہ “یہ وبائی بیماری کی طرح ہے – مجھے ای میل ، فیس بک میسنجر ، انسٹاگرام اور واٹس ایپ پر ایسے سیکڑوں لوگوں کے ذریعہ 5000 کے قریب پیغامات موصول ہوئے ہیں۔ . انہوں نے کہا کہ  بہت سے لوگوں نے بعد میں اپنے اکاؤنٹس بند کر دیے  یا کارروائی کے خوف سے  وہ پوسٹس حذف کردی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے آئی ٹی سیل نے ٹویٹر پر میرے خلاف سخت اور بدنیتی پر مبنی مہم چلائی ہے۔ تصدیق شدہ اکاؤنٹ کے حامل لوگ اور بہت سارے جنہیں خود وزیر اعظم فولو کرتے ہیں، مجھے گالیاں دے رہے ہیں اور دھمکیاں دے رہے ہیں کہ میرا پاسپورٹ منسوخ کیا جائے گا اور مجھے اور میری بیٹیوں کو نقصان پہنچائیں گے۔ یہاں تک کہ انھوں نے سوشل میڈیا پر اپنی فوٹو بھی پوسٹ کی ہے۔

مظہر دبئی میں گلف نیوز میں ملازمت سے قبل لکھنؤ میں ہندوستان ٹائمز کے لئے کام کرچکے ہیں۔ اپنی تفتیشی رپورٹس کے لئے متعدد ایوارڈز وصول کرنے والے فاروقی بی جے پی کے آئی ٹی سیل کی دھمکیوں سے نہ بچ پائے ، شاید اس لئے کہ وہ ہندوستانی بزنس مینوں کے دھوکہ دہی کے متعدد واقعات کا انکشاف کر چکے ہیں۔ انہوں نے ہندوستان کی ایک ایجنسی کو بھی بے نقاب کیا تھا  جس نے مبینہ طور پر خلیج میں جھوٹی ملازمتوں کے انٹرویوز کا بندوبست کرنے کے عوض بھاری رقم لوٹی جاتی تھیں۔

Courtesy Gulf News

Share this story

Leave a Reply