مہنگائی سے نمٹنے کے لئے 15 ارب روپے کے ریلیف پیکچ کی منظوری

Share this story

پاکستان کی وفاقی کابینہ نے عوام کو مہنگائی کے بوجھ میں کمی کے لئے 15 ارب روپے کے ریلیف پیکچ کی منظوری دی ہے جس کے ذریعے یوٹیلٹی اسٹورز پر ارزاں نرخ پر اشیا خورد و نوش مہیا کی جائیں گی۔

مشیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ یوٹیلٹی سٹور کارپوریشن کو آئندہ پانچ ماہ تک ماہانہ دو ارب روپے سبسڈی فراہم کی جائے گی، تاکہ عوام کو سستے نرخ اشیا ضروریہ مہیا ہوسکیں۔

انھوں نے بتایا کہ یوٹیلٹی اسٹورز پر دالوں اور چاول پر 15 سے 20 روپے فی کلو سبسڈی ملے گی، جبکہ 20 کلو آٹے کا تھیلہ 800 سو روپے، چینی 70 اور گھی 175 روپے کلو ملےگا۔

انہوں نے کہا کہ حکومت غریب اور مستحق افراد کے لئے رمضان میں راشن کارڈ کا آغاز کر رہی ہے جس کے تحت اشیا خود و نوش پر 25 سے 30 فیصد ریاعت دی جائے گی۔

فردوس عاشق نے بتایا کہ وزیر اعظم نے گیس اور بجلی کی قیمتیں بڑھانےکی مخالفت کی اور کہا کہ عوام پر مہنگائی کا پہلے ہی بوجھ ہے مزید بوجھ نہیں ڈال سکتے۔

پاکستان کے ادارہ شماریات کی ماہانہ رپورٹ کے مطابق دسمبر 2019 میں مہنگائی کی شرح 12.6 فیصد تھی جو جنوری 2020 میں بڑھ کر 14 اعشاریہ 6 فیصد ہو گئی جب کہ جنوری 2019 میں یہ شرح 5 اشاریہ 6 فیصد تھی۔

Share this story

Leave a Reply