اومی کرون کا ’اٹھتا ہوا طوفان‘، عالمی سطح پر بوسٹر شاٹس کی اپیل

Share this story

کورونا وائرس کی نئی قسم اومی کرون کے یورپ، امریکہ، مشرق وسطیٰ اور ایشیا میں تیزی سے پھیلاؤ کے بعد حکومتوں نے جہاں ایک مرتبہ پھر سخت اقدامات لینا شروع کیے ہیں وہیں عوام پر کورونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین لگوانے پر بھی زور دے رہے ہیں۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق متعدد ممالک ویکسین کی دوسری خوراک اور بوسٹر شاٹ کے درمیان وقت کم کرنے کی بھی کوشش کر رہے ہیں۔

کورونا وائرس کے اومی کرون ویریئنٹ کے یورپ، امریکہ، مشرق وسطیٰ اور ایشیا میں تیزی سے پھیلاؤ کے بعد مختلف ممالک نے وائرس کی ایک اور خطرناک لہر سے نمٹنے کے لیے کمر کس لی ہے۔

عرب نیوز کے مطابق عالمی ادارہ صحت کے یورپی سربراہ ہانس کلوُگ کا کہنا ہے کہ ’ہمیں ایک اور طوفان اٹھتا نظر آرہا ہے۔‘

انہوں نے یورپی ممالک کو کورونا وائرس کے کیسز میں ’خاطر خواہ اضافے‘ کی تنبیہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی اقسام میں سے جلد ہی اومی کرون سب سے نمایاں ویریئنٹ ہوگا جو  مختلف ممالک کا نظامِ صحت مزید دباؤ کا شکار ہو جائے گا۔

جرمنی، سکاٹ لینڈ، آیئرلینڈ، نیدرلینڈز اور جنوبی کوریا کا شمار ان ممالک میں ہے جنہوں نے جزوی یا مکمل لاک ڈاؤن نافذ کر دیا ہے یا پھر سماجی فاصلہ رکھنے کی احتیاطی تدابیر کے احکامات جاری کر دیے ہیں۔

علاوہ ازیں جاپان کے ایک فوجی اڈے میں کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد 180 ہوگئی ہے۔ تمام مریضوں کا تعلق ایک ہی کلسٹر سے ہے، یعنی ان سب کو وائرس لگنے کا ذریعہ ایک ہی ہے۔

Share this story