بھارت میں آزادی اظہار اور اختلاف رائے تقریباً ختم ہوچکا ہے: واشنگٹن پوسٹ

Share this story

ایک معروف بین الاقوامی روزنامے واشنگٹن پوسٹ نے کہاہے کہ بھارت میں آ زادی اظہار اور اختلاف رائے تقریباً ختم ہوچکا ہے کیونکہ بی جے پی حکومت کے خلاف بولنے والے ہرشخص کو دہشت گردقراردے دیاجاتاہے۔

ایک تجزیے میں اخبارلکھتاہے کہ زرعی قوانین پرکسانوں کے احتجاج پرنارواسلوک کے باعث یہ احتجاج انقلاب میں تبدیل ہورہاہے جس نے حکومت کو ہلاکررکھ دیاہے کیونکہ یہ احتجاج بین الطبقاتی ہے جس میں کسان، مزدور، خواتین اورطویل عرصے تک ہندوستان میں ذات برادری کی بنیاد پر تفریق کاسامناکرنے والی دلت برادری شامل ہیں۔

نریندرمودی کے شدت پسنداورانسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پرمبنی پورے سیاسی کیریئرکا احاطہ کرتے ہوئے اخبارنے اس احتجاج کوملک میں آزادی اظہاراوراختلاف کی تجدید کی آخری امیدقراردیا۔

Share this story