سفری پابندیوں سے اومی کرون کے پھیلاؤ کی روک تھام ممکن نہیں ہوگی،ڈبلیو ایچ او

Share this story

دنیا بھر میں حکومتیں کورونا وائرس کی نئی قسم اومیکرون کے کیسز کے بارے میں اعدادوشمار کاجائزہ لے رہی ہیں۔اعدادوشمار کے مطابق جنوبی افریقہ میں گزشتہ ہفتے اس کی تشخیص سے پہلے وائرس کی یہ نئی قسم پھیل رہی تھی اوراس کے بعد ایک درجن سے زیادہ ملکوں میں اس کی موجودگی کی تصدیق ہوچکی ہے ۔عالمی ادارہ صحت نے مہینوں بعد وائرس کی اس نئی قسم کو خطرناک اور انتہائی تشویشناک قراردیا جن ملکوں میں وائرس کی اس نئی قسم کی تصدیق ہوچکی ہے ان میں آسٹریلیا ، آسٹریا، بیلجیم ، بوٹسوانہ ، برازیل ، کینیڈا ، جمہوریہ چیک ، ڈنمارک ، فرانس ، جرمنی ، ہانگ کانگ ، اسرائیل ، اٹلی ، جاپان ، ہالینڈ، نائیجریا ، ناروے ، پرتگال ، سعودی عرب، جنوبی افریقہ، سپین ، سویڈن اوربرطانیہ شامل ہیں۔عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل TEDROS ADHANOM GHEBREYESUS نے خبردار کیا ہے کہ سفر پر مکمل پابندی سے اومی کرون کے پھیلائو کو نہیں روکا سکتا ۔انہوں نے صحت کے بین الاقوامی قواعد وضوابط کو مدنظر رکھتے ہوئے خطرات کو کم کرنے کیلئے مناسب اقدامات کرنے پر زوردیا ۔

Share this story