سینیٹ کی ایک نشست،چار سابق وزرائے اعظم اور سابق صدر ایک وزیر اعظم کو شکست دینے کے لیے متحرک

Share this story

اسلام آباد (آن لائن) چار سابق وزرائے اعظم اور سابق صدر ایک وزیر اعظم کو سینٹ میں شکست دینے کے لیے متحرک گئے۔

پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے وزیر اعظم عمران خان کے سینٹ الیکشن کے امیدوار حفیظ شیخ کو شکست دینے کے لیے سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کو میدان میں اتارا گیا ہے اور انکی حمایت میں ملک کی گیارہ جماعتوں کے ساتھ چار وزرائے اعظم، شاہد خاقان عباسی، راجہ پرویز اشرف، یوسف رضا گیلانی اور نواز شریف کے علاوہ ملک کے سابق صدر آصف علی زرداری بھی میدان میں اتر چکے ہیں اور انہوں نے عہد کیا ہے کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے گیارہ جماعتوں کا اتحاد اور سابق وزیر، مشیر اور وزرائے اعظم کے ساتھ ایک صدر بھی شامل ہے۔

پاکستان مسلم لیگ ن یوتھ ونگ لاہورکے نائب صدرچودھری شاہدعلی خان نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن کے سینئررہنماء ممبرپنجاب اسمبلی ملک سیف الملوک کھوکھرکوسینٹ کا ٹکٹ دے کر مسلم لیگ ن کی قیادت نے بہت ہی اچھا فیصلہ کیا ہے جس سے مسلم لیگ ن کے ورکرزمیں خوشی کی لہردوڑگئی ہے۔ چودھری شاہدعلی خان نے کہا ہے کہ ملک سیف الملوک کھوکھر ہمارے بڑے بھائی ہیں انہوں نے ہمیشہ پارٹی ورکرزکی دل سے قدرکی ہے،انہوں نے کہا کہ ملک سیف الملوک کھوکھرکوسینٹ کا ٹکٹ ملنے پران کو مبارکباد دیتے ہیں، اورامیدکرتے ہیں کہ وہ دبنگ طرح سے پارٹی قیادت کے فیصلوں پر عمل کرتے ہوئے میاں نوازشریف کے بیانیہ کوآگے بڑھائیں گے۔

دریں اثناء جے یو آئی کے مرکزی ترجمان اسلم غوری نے کہا کہ لانگ مارچ میں قوم کو اپنے حقوق کے تحفظ کے لئے نکلنا ہوگا، ضمنی انتخابات ٹیسٹ کیس تھے، الیکشن کمیشن ناکام ہوچکا۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو اپنے ووٹ کے تحفظ کے لئے خود ہی میدان میں آنا ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ سینٹ انتخابات میں اوپن بلٹنگ کے لئے صدارتی آرڈیننس، سپریم کورٹ کے چکر لگانے والے اس اوپن دھاندلی پر کیوں خاموش ہیں۔ مرکزی ترجمان نے کہا کہ الیکشن کمیشن قومی ادارہ ہے۔ اسے اپنے تقاضے پورے کرنے چاہئے۔

Share this story

Leave a Reply