نواز شریف: جنرل قمر باجوہ پر ن لیگ حکومت کو ’رخصت‘ کرانے، عمران خان حکومت کے لیے ’جوڑ توڑ‘ کرنے کا الزام

Share this story

ویب ڈیسک – گوجرانوالہ میں ہونے والے پی ڈی ایم کے جلسے سے بذریعہ ویڈیو لنک خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے تاحیات قائد نواز شریف نے پاکستان کی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ پر مسلم لیگ ن کی حکومت کو ‘رخصت’ کرانے اور عمران خان کی حکومت کو برسراقتدار لانے کے لیے ‘جوڑ توڑ’ کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔

نواز شریف نے اپنے خطاب کے دوران ملکی حالات پر بات کرتے ہوئے اور گذشتہ عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی کے الزامات دہراتے ہوئے پاکستان فوج کے سربراہ کو ذمہ دار ٹھہرایا اور سوال کیا کہ سویلین حکومتوں کو ان کی مدت مکمل کرنے کیوں نہیں دی جاتی۔

نواز شریف پاکستان میں حزب اختلاف کی جماعتوں کے سیاسی اتحاد، پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے حکومت مخالف تحریک کے گوجرانوالہ میں ہونے والے پہلے جلسے سے لندن سے بذریعہ ویڈیو لنک خطاب کر رہے تھے۔

پاکستان میں حزب اختلاف کی جماعتوں کا اتحاد، پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کا حکومت کے خلاف اعلان کردہ تحریک کا پہلا جلسہ گوجرانوالہ کے جناح سٹیڈیم میں منعقد کیا گیا۔

پاکستان کے مقامی وقت کے مطابق رات سوا گیارہ بجے نواز شریف نے لندن سے اپنی تقریر میں ملک میں مہنگائی، ترقیاتی منصوبوں، سول ملٹری تعلقات، انتخابات میں مبینہ دھاندلی اور سیاستدانوں کو ’غدار‘ کہلائے جانے جیسے مختلف موضوعات پر بات کی۔

نواز شریف نے اپنی تقریر میں کہا کہ تمام سیاستدانوں کو ’غدار‘ کہلایا جاتا ہے اور شروع سے فوجی آمر سیاست دان جیسے فاطمہ جناح، باچا خان، شیخ مجیب الرحمان اور دیگر رہنماؤں کو غدار قرار دیتے رہے ہیں۔

نواز شریف نے سیاستدانوں پر غداری کے الزامات لگائے جانے پر کہا کہ ’پاکستان میں محب وطن کہلائے جانے والے وہ ہیں جنھوں نے آئین کی خلاف ورزی کی اور ملک توڑا۔‘

انھوں نے اپنی تقریر میں الزام لگایا کہ پاکستان میں انتخابات میں مینڈیٹ کو ’چوری‘ کیا گیا اور ’دھاندلی‘ کی گئی۔

انھوں نے اپنی تقریر میں فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے سابق سربراہ اور وزیر اعظم کے سابق معاون خصوصی برائے میڈیا لیفٹننٹ جنرل ریٹائرڈ عاصم باجوہ کے خلاف حال ہی میں لگنے والے الزامات کا بھی ذکر کیا۔

 

More on this story from BBC Urdu

Share this story

Leave a Reply