وزیرخارجہ کی ایرانی صدر سے ملاقات، تعلقات مستحکم کرنے کے عزم کا اعادہ

Share this story

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور ایرانی صدر حسن روحانی کے درمیان ہونے والی ملاقات میں تجارت، سرمایہ کاری اور سرحدی انتظام کے شعبوں میں تعاون بڑھانے کے عزم کا اعادہ کیا گیا ہے۔

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی صدارتی محل آمد پر ان کا پرتپاک خیر مقدم کیا گیا۔ وزیر خارجہ نے صدرِ پاکستان ڈاکٹر عارف علوی اور وزیراعظم عمران خان کی جانب سے، صدر روحانی اور برادر ایرانی قوم کے لئے نیک تمناؤں اور خیر سگالی کا پیغام پہنچایا۔

مخدوم شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستانی قیادت، کشمیری مسلمانوں کے نکتہ نظر کی مسلسل حمایت پر ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ سید علی خامنائی اور صدر حسن روحانی کی حکومت کو خراج تحسین پیش کرتی ہے۔

وزیر خارجہ نے ایرانی صدر سے پاکستان اور ایران کے دیرینہ برادرانہ تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کے لئے مختلف طریقہ ہائے کار پر گفتگو کی۔

ان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک میں مشترک تاریخ، ثقافت، مذہب اور زبان پر مبنی خوشگوار قریبی اور مضبوط تعلقات استوار ہیں۔ ہم وزیراعظم عمران خان کے وژن کی روشنی میں، برادر ملک ایران کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کے استحکام کیساتھ ساتھ باہمی دلچسپی کے مختلف شعبہ جات میں دو طرفہ تعاون کے فروغ کے لئے پرعزم ہیں۔

صدر حسن روحانی نے ایران کی جانب سے تجارت، سرمایہ کاری، رابطوں کی استواری اور سرحدی انتظام (بارڈر مینجمنٹ) میں پاکستان کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کو مزید بڑھانے کے ایرانی عزم کا اعادہ کیا۔

دریں اثنا وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور پاک ایران پارلیمانی دوستی گروپ کے چیئرمین احمد امیرآبادی فراحانی نے دونوں ملکوں کے پارلیمانی دوستی گروپس کو فعال کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

وزیر خارجہ نے تہران کے قومی پارلیمنٹ ہاؤس میں چیئرمین پاک ایران پارلیمانی دوستی گروپ سے ملاقات کے دوران کہا کہ پاکستان ایران کے ساتھ مشترکہ مذہبی اور ثقافتی اقدار پر مبنی تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہے۔

فریقین نے دونوں ملکوں کے پارلیمانی وفود کے تبادلے پر اتفاق کیا۔

This article originally appeared on Roznama Dunya

Share this story