پاکستان کی قومی اسمبلی میں حکومتی اور اپوزیشن ارکان کے درمیان ہاتھا پائی، اسد قیصر کا تحقیقات کا اعلان

Share this story

پی ٹی آئی سے تعلق رکھنے والے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصد نے بدھ کو قومی اسمبلی میں پیش آنے والے واقعات کو مایوس کُن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس کی مکمل تحقیقات کروائی جائیں گی۔

انھوں نے کہا ہے کہ غیر پارلیمانی زبان استعمال کرنے والے ارکان کو بدھ کو ایوان میں داخلے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

پاکستان کی قومی اسمبلی میں منگل کو ہونے والا اجلاس ہنگامہ آرائی کی نذر ہو گیا جس میں اپوزیشن اور حکومتی ارکان باہم دست و گریباں نظر آئے۔

یاد رہے کہ پیر کو بھی اجلاس کے دوران شور شرابہ دیکھنے میں آیا تھا لیکن منگل کو ایوان میں ہونے والی ہنگامہ آرائی کے بعد قومی اسمبلی کا اجلاس بدھ تک کے لیے ملتوی کر دیا گیا۔

پی ٹی آئی سے تعلق رکھنے والے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصد نے اپنی ایک ٹویٹ میں اسمبلی میں ہونے والے واقعات کو مایوس کُن قرار دیا۔ اُنھوں نے کہا کہ واقعے کی مکمل تحقیقات کروائی جائیں گی اور غیر پارلیمانی زبان استعمال کرنے والے ارکان کو بدھ کو ایوان میں داخلے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

واضح رہے کہ یہ قومی اسمبلی کا بجٹ اجلاس ہے جس میں حکومت کی جانب سے قومی بجٹ پیش کیا جا چکا ہے اور اب اس پر بحث جاری ہے۔ حکمراں جماعت کی جانب سے بجٹ پیش کیے جانے کے موقع پر بھی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی ہوئی تھی۔

More on this story from BBC Urdu

Share this story