کورونا سے 2لاکھ اموات ‘شرمندگی کا باعث’ ، لیکن اس سے بھی بدتر ہوسکتی تھیں، ٹرمپ

Share this story

واشنگٹن (پاک جرگہ، 23rd September, 2020) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ COVID-19 کی وجہ سے 200،000 اموات شرمندگی کی بات ہے، لیکن اگر ان کی انتظامیہ نے اپنے تمام اقدامات نہ کیے ہوتے تو شاید یہ تعداد شاید ڈھائی لاکھ تک پہنچ چکی ہوتی۔

ٹائمز آف اسرائیل کے مطابق ، انہوں نے دعویٰ کیا کہ اس وبائی بیماری سے اب تک ہونے والی اموات ان کی انتظامیہ کی کامیابی کا اشارہ ہے۔

جان ہاپکنز یونیورسٹی کے مطابق اب تک 200،182 امریکی کورونا سے ہلاک ہو چکے ہیں اور 6.86 ملین میں بیماری کی تصدیق ہوچکی ہے، جو تمام دنیا میں سب سے زیادہ ہے۔

ٹرمپ نے ایک بار پھر اپنے اس موقف کو دہرایا کہ چین اس بیماری کے پھیلاؤ کا ذمہ دار ہے۔

Video source CGTN YouTube Channel

امریکا میں کورونا کے کیسز میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور روزانہ اوسطا 770 کے قریب اموات ہو رہی ہیں۔

واشنگٹن یونیورسٹی کے تیار کردہ ایک ماڈل کو، جسے اہمیت کے ساتھ دکھا جاتا ہے، نے پیش گوئی کی ہے کہ اسکولوں اور کالجوں کے دوبارہ کھلنے اور سردی کے موسم کے آغاز کے ساتھ ہی اس سال کے آخر تک امریکہ میں اموات کی تعداد 400،000 تک پہنچ سکتی ہے۔ جبکہ ویکسین کا 2021 تک وسیع پیمانے پر دستیاب ہونے کا امکان نہیں ہے۔

Share this story

Leave a Reply