Jirga South Asia

  • This topic is empty.
Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #16263
    Shahid Masood
    Participant

    نئی دلی: ملکوں کے درمیان سرحدی جھڑپیں ہونے کی خبریں تو آتی رہتی ہیں لیکن کسی ملک کے اپنے صوبوں کے درمیان خونریز سرحدی جھڑپ ہوایسی خبر بہت کم آتی ہے۔

    پڑوسی ممالک میں بدامنی پھیلانے والا بھارت خود خانہ جنگی کے دہانے پر پہنچ گیا۔ ریاست آسام اور میزورام میں علاقائی ملکیت پر جھڑپوں میں کم ازکم 6 پولیس اہلکاروں سمیت سات افراد مارے گئے جبکہ 70 زخمی ہوگئے۔

    اس وقت دونوں ریاستوں کی سرحد پر زبردست کشیدگی ہے۔

    [embed]https://youtu.be/vVivjFYdeSg[/embed]

    جھڑپوں کا آغاز آسام کی سرکاری افسر کی ایک گاڑی پر فائرنگ سے ہوا، ریاست میزرام کے اہلکاروں نے آسام کے آفیسر کی گاڑی کو بھی نظر آتش کر دیا۔ واقعہ کے بعد دونوں ریاستوں میں جھڑپیں چھڑ گئیں۔ لڑائی میں 6 پولیس اہلکار اور ایک شہری مارا گیا جبکہ 70زخمی ہوئے۔

    جھڑپوں کے بعد کئی گاڑیوں کو آگ بھی لگا دی گئی، دونوں ریاستوں میں لائلہ پور کی ملکیت پر جھگڑا ہے۔ جھڑپوں کے بعد آسام اور میزورام میں حالات سخت کشیدہ ہیں۔

    جب مقامی لوگ جمع ہونے لگے تو ان پر لاٹھی چارج کیا گیا اور آنسو گیس کے گولے داغے گئے۔ اس میں متعدد افراد زخمی ہوئے۔

    اعلیٰ پولیس اہلکاروں نے آسام پولیس کو سمجھانے کی کوشش کی۔ وزیر اعلیٰ کے مطابق کشیدگی کے درمیان آسام پولیس نے دستی بم پھینکے اور فائرنگ کی جس کے جواب میں میزورم پولیس نے بھی فائرنگ کی۔

    آسام کے وزیر اعلی ہیمنت شرما نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ ’مجھے یہ بتاتے ہوئے بہت تکلیف ہو رہی ہے کہ آسام پولیس کے چھ جوانوں نے ریاست کی آئینی سرحد کا دفاع کرتے ہوئے اپنی جان قربان کر دی۔‘

    انھوں نے مزید کہا ’جو ثبوت سامنے آئے ہیں ان سے یہ واضح طور پر پتہ چلتا ہے کہ میزورم پولیس نے آسام پولیس کے خلاف لائٹ مشین گن کا استعمال کیا جو بہت افسوسناک ہے۔‘

    اطلاعات ہیں کہ اب آسام اور میگھالیہ کی سرحد پر بھی کشیدگی پیدا ہو رہی ہے۔

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.