• This topic is empty.
Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #13346
    Shahid Masood
    Participant

    اسرائیل میں ہونے والے انتخابات میں 90 فیصد ووٹوں کی گنتی ہو چکی ہے اور فی الحال یہ امکان ہے کہ وزیراعظم بنیامین نتن یاہو اقتدار میں رہنے کے لیے درکار ووٹ حاصل نہیں کر سکیں گے۔

    متوقع نتائج کے مطابق ان کے دائیں بازو کے اتحاد کو 59 نشستیں حاصل ہوں گی جو کہ کم از کم درکار سیٹوں سے بھی 2 نشستیں کم ہیں۔

    اعداد و شمار نے ایک ایسی دلچسپ صورتحال پیدا کر دی ہے جس میں کہا جا رہا ہے کہ شاید مسلمان عربوں کی جماعت یونائیٹڈ عرب پارٹی کے رہنما منصور عباس حکومت بنانے میں ’کِنگ میکر‘ ثابت ہو سکتے ہیں۔

    اسرائیل عربوں کے حقوق اور فلسطینی ریاست کے حق میں بات کرنے والے منصور عباس کی جماعت غیر حتمی نتائج کے مطابق پانچ سیٹیں جیتنے میں کامیاب ہو سکتی ہے۔ اگر ایسا ہوگیا تو اس بات کا انحصار منصور عباس پر ہوگا کہ ایک ایسی صورتحال میں جہاں کسی کو بھی واضح اکثریت حاصل ہونے کا امکان نہیں ہیں، اپنی پانچ سیٹوں کا وزن کس کے پلڑے میں ڈالتے ہیں۔

    متوقع نتائج کے مطابق نتن یاہو کے مخالفین 57 نشستوں پر کامیاب ہو سکتے ہیں اور اگر منصور عباس کی جماعت ان کے ساتھ شامل ہو جاتی ہے تو ان کو حکومت بنانے کے لیے اکثریت حاصل ہو جائے گی۔ لیکن اس بات کے امکانات کم ہیں کہ وہ ایک دوسرے کے ساتھ کام کر سکیں گے۔

    اگر کوئی بھی اتحاد بنانے میں کامیاب نہیں ہوتا تو ملک میں 2019 کے بعد سے اب تک کے عرصے میں پانچویں عام انتخابات ہو سکتے ہیں۔

    More on this story from BBC Urdu

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.