Jirga South Asia

  • This topic is empty.
Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #11306
    Zaid
    Moderator

    انڈیا میں شہریت کے متنازع ترمیمی بل کو حزب اختلاف سمیت دیگر سماجی حلقوں کی جانب سے سخت مخالفت کا سامنا ہے جس کی وجہ سے ملک بھر کے مختلف شہروں میں حکومت مخالف مظاہروں اور ہڑتالوں کا سلسلہ جاری ہے۔

    برطانیہ، امریکہ، اسرائیل اور کینیڈا کی حکومتوں نے اپنے شہریوں کو انڈیا کے غیر ضروری سفر سے اجتناب کرنے کی تنبیہ کی ہے اور سفر کرنے والوں کو انتہائی احتیاط برتنے کا مشورہ دیا ہے۔

    فیس بک، بی جے پی اور آر ایس ایس کے کنٹرول میں ہے: راہول گاندھی

    کینیڈا کی سرکاری ویب سائٹ پر 13 دسمبر کو شائع کیے گئے بیان میں کہا گیا ہے ’کینڈین شہری آسام، اروناچل پردیش، منی پر، میگھالایا، میزورام اور ناگالینڈ کا سفر غیر ضروری طور پر نہ کریں اور سفر کرنے والے انتہائی محتاط رہیں۔‘

    دوسری طرف امریکی سٹیٹ ڈپارٹمنٹ نے بھی سرکاری اہلکاروں کے آسام جانے پر پابندی عائد کردی ہے اور عام امریکی شہروں سے کہا گیا ہے کہ وہ بہت زیادہ احتیاط برتیں۔

    اسرائیل کی آئندہ ماہ تک یو اے ای میں سفارت خانہ کھولنے کی تیاریاں

    جبکہ اسرائیل کی حکومت نے بھی اپنے شہریوں سے کہا ہے کہ وہ آسام نہ جائیں اور شمال مشرقی ریاستوں میں موجود لوگ وہاں سے جلد از جلد نکل آئیں۔

    ادھر برطانوی حکومتی ویب سائٹ کا کہنا ہے کہ انڈیا میں شہریت کے متنازع ترمیمی بل کی وجہ سے ملک بھر کے مختلف شہروں میں حکومت مخالف مظاہروں اور ہڑتالوں کی وجہ سے برطانوی شہری انتہائی احتیاط برتیں۔

    آسٹریا میں طالبات پر اسکارف پہننے کی پابندی غیرقانونی قرار

    یاد رہے کہ انڈیا میں ریپ کے بڑھتے ہوئے واقعات کے باعث برطانوی حکومتی ویب سائٹ پہلے ہی برطانوی خواتین کو انڈیا میں اکیلے سفر کرنے سے اجتناب کرنے کا کہہ چکی ہے اور اس بارے میں سخت حفاظتی تدابیر کی فہرست حکومتی ویب سائٹ پر شائع کی جاچکی ہیں۔

    This article originally appeared on BBC Urdu

     

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.