• This topic is empty.
Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #12340
    Shahid Masood
    Participant

    امریکہ نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کو اسلحے کی فروخت روک دی ہے جس کامقصد تزویراتی اہداف اورخارجہ پالیسی کا دوبارہ جائزہ لینا ہے۔

    واشنگٹن میں وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے صحافیوں کو بتایاکہ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے اسلحے کی فروخت کے کئے گئے معاہدوں کا دوبارہ جائزہ لینے کامقصد امریکی تزویراتی مقاصد کے حصول کویقینی بنانا ہے۔

    عرب نیوز الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق امریکا میں سیکریٹری آف اسٹیٹ کا منصب سنبھالنے والے اینٹونی بلینکن نے اپنی پہلی پریس بریفنگ میں کہا کہ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی سعودی عرب اور امارات کو اسلحہ فروخت کرنے کی پالیسی کا جائزہ لے رہے ہیں۔ ہمارا مقصد خارجہ پالیسی کو زیادہ سے زیادہ موثر بنانا اور حکمت عملی کے اہداف کو یقینی بنانا ہے اور ایسا ہی کر رہے ہیں۔

    امریکی میڈیا میں چند روز قبل بھی یہ خبریں شائع ہوئی تھیں کہ جوبائیڈن انتظامیہ اسلحے کی فروخت کے معاہدے عارضی طور پر روک رہی ہے کیونکہ یہ معاہدے اربوں ڈالرز کے ہیں۔ ان معاہدوں کے تحت سعودی عرب کو جدید اسلحہ اور امارات کو ایف 35 کی فروخت بھی شامل ہے۔

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.