• This topic is empty.
Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #12701
    Shaista Khan
    Participant

    اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ وہ دبئی کے حکمران کی بیٹی شہزادی لطیفہ کی حراست کا معاملہ متحدہ عرب امارات کے حکام کے ساتھ اٹھائیں گے۔

    شہزادی لطیفہ کے حامیوں نے امریکی صدر جو بائیڈن سے اپیل کی ہے کہ وہ دبئی کی شہزادی کی رہائی کے لیے متحدہ عرب امارات پر دبائو ڈالیں۔

    میڈیارپورٹس کے مطابق دبئی کی شہزادی لطیفہ کے حامیوں نے امریکی صدر جو بائیڈن سے مطالبہ کیا کہ وہ ان کی رہائی کے لیے متحدہ عرب امارات پر اپنے اثر و رسوخ کا استعمال کرتے ہوئے دبائو ڈالیں۔

    دبئی کے حکمراں شیخ محمد بن راشد المکتوم کی 35 سالہ بیٹی شہزادی لطیفہ کا کہنا تھا کہ انہیں ان کے باپ نے ایک جیل نما گھر میں یرغمال بنا رکھا ہے۔

    گزشتہ روز ان کے ایک ویڈیو سے پتہ چلا کہ ان کے والد نے ایک گھر میں انہیں قید کر رکھا ہے۔


    Video Source: USA Today YouTube Channel

    خفیہ ویڈیوز میں دیکھا جا سکتا ہے کہ شہزادی لطیفہ کہتی ہیں کہ ان کی زندگی خطرے میں ہے۔ اس ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے بعد عالمی سطح پر اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ معاملے کی تحقیقات کرے۔

    شہزادی لطیفہ نے سن 2018 میں دبئی سے فرار ہونے کی ایک ناکام کوشش کی تھی تاہم خاندان نے شہزادی لطیفہ کو بھارت کی مدد سے راستے ہی میں پکڑوا لیا تھا۔ اس کے بعد سے ہی ان کے بارے میں عوامی سطح پر کوئی بھی معلومات دستیاب نہیں تھیں۔

    شیخہ لطیفہ نے 2018 کے فرار کی کوشش سے پہلے ایک اور ویڈیو پیغام ریکارڈ کیا تھا جو ان کے پکڑے جانے کے بعد یو ٹیوب پر پوسٹ کیا گیا تھا۔ اس میں شیخہ کہتی ہیں ‘اگر آپ یہ ویڈیو دیکھ رہے ہیں تو یہ کوئی اچھی بات نہیں ہے، یا تو میں مر چکی ہوں یا پھر کسی بہت ہی مشکل صورتحال سے دو چار ہوں۔’

    اس پیغام کی وجہ سے ان کے بارے بین الاقوامی تشویش پیدا ہوئی اور ان کی رہائی کے مطالبات نے زور پکڑا۔ متحدہ عرب امارات پر ان کے لیے بہت دباؤ ڈالا گیا اور رابنسن کے ساتھ ان کی ایک ملاقات کا اہتمام کرنا پڑا۔

    اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق کے دفتر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ متحدہ عرب امارات سے شہزادی لطیفہ کے بارے میں دریافت کیا جائے گا۔

    لطیفہ کی رہائی کے لیے مہم چلانے والے انسانی حقوق کے علمبرادار ڈیوڈ ہائی کا کہنا تھا کہ امریکی صدر جو بائیڈن کی شخصیت ہی ان کی رہائی کے لیے زیادہ زیادہ سے دبائو ڈال سکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جب بائیڈن کی انتظامیہ نے حال ہی میں سعودی عرب کو کچھ ہتھیاروں کی فروخت پر پابندی عائد کی تو سعودی عرب نے انسانی حقوق کی کارکن لوجین الہذلول کو رہا کر دیا اور اس بات سے شہزادی لطیفہ کے حامیوں کو کافی حوصلہ ملا ہے۔

    دوسری جانب دبئی کے حکمران کی بیٹی شہزادی لطیفہ کی ویڈیوز سامنے آنے کے بعد برطانوی وزیر خارخہ ڈومینیک راب نے دبئی حکومت سے ان کے زندہ ہونے کے شواہد پیش کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

    غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق سامنے آنے والی ایک ویڈیو میں پینتس سالہ شہزادی لطیفہ کا اپنے والد محمد بن راشد آل متوم پر الزام عائد کرتے ہوئے کہنا تھا کہ انہوں نے تین سال سے اسے مغوی بنا رکھا ہے۔ شہزادی لطیفہ نے تین برس پہلے دبئی سے فرار ہونے کی کوشش کی تھی۔ دو روز قبل اقوام متحدہ نے بھی کہا تھا کہ وہ دبئی کے حکمران کی بیٹی شہزادی لطیفہ کی حراست کا معاملہ متحدہ عرب امارات کے حکام کے ساتھ اٹھائیں گے۔

    متحدہ عرب امارات کے حکام متعدد مرتبہ کہہ چکے ہیں کہ وہ (شہزادی) اپنے خاندان کے پاس محفوظ ہیں۔

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.