Jirga Pakistan

Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #7766
    Shahid Masood
    Participant

    کوئٹہ:  بلوچستان نیشنل پارٹی (مینگل) نے تحریک انصاف سے اتحاد ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

    قومی اسمبلی میں بجٹ پر بحث کے دوران بلوچستان نیشنل پارٹی (مینگل) کے سربراہ سردار اختر جان مینگل نے تحریک انصاف سے اتحاد ختم کرنے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایوان میں موجود رہیں گے اور اپنی آواز بلند کرتے رہیں گے۔

    اجلاس کے دوران اظہار خیال کرتے ہوئے اختر جان مینگل نے کہا کہ بلوچستان آپ کا مقروض نہیں، اگر حساب کریں تو آپ کا ایک ایک بال بلوچستان کا قرض دار ہوگا، سوئی گیس کی رائلٹی تو چھوڑیں، ہمیں گیس سونگھنے کو بھی نہیں ملتی، میرے بلوچ کا خون کیوں زیر بحث نہیں آتا، کیا اس کا رنگ ٹماٹر کے رنگ سے زیادہ خراب ہے، ہمیں کوئی لائن میں نہیں لگنے دیتا، آپ آن لائن کی بات کررہے ہیں،  لوگوں کے مجھے مسیجز آئے کہ ہمارے بچوں کو مت پڑھاؤ، اگر ہمارے بچے پڑھ گئے تو حق اور ناحق میں فرق کرنا سیکھ جائیں گے۔بلوچستان کو برابر کا حصہ دینا ہوگا، آج نہیں تو کل دینا ضرور ہوگا۔

    واضح رہے کہ بی این پی مینگل کی علیحدگی کے بعد وفاقی حکومت قومی اسمبلی میں 4 ووٹوں سے محروم ہوگئی ہے، اس کے علاوہ سینیٹ میں بھی ایک ووٹ کم ہوگیا ہے، اس طرح تحریک انصاف کے لیے مسلم لیگ (ق)، ایم کیو ایم ، بی اے پی اور جی ڈی اے کی اہمیت بڑھ گئی ہے۔

     

    قومی اسمبلی میں نمبر گیم

    حکومت اور اس کے اتحادیوں کی قومی اسمبلی میں عددی اکثریت کا جائزہ لیں تو 156 نشستیں رکھنے والی تحریک انصاف کو متحدہ قومی موومنٹ کے سات ارکان، پاکستان مسلم لیگ (ق) اور بلوچستان عوامی پارٹی کے پانچ، پانچ ارکان کے علاوہ گرینڈ ڈیمو کریٹک الائنس کے تین، جمہوری وطن پارٹی اور عوامی مسلم لیگ کے ایک، ایک رکن کی حمایت حاصل ہے۔

    172 کی عددی اکثریت کے ایوان میں 178 اراکین کی حمایت رکھنے والی تحریک انصاف کو اگرچہ بظاہر کوئی بڑا خطرہ لاحق نہیں ہے تاہم بجٹ منظوری سمیت ہر قانون سازی کے لیے حکومتی جماعت کو ایوان میں اکثریت ثابت کرنا ہو گی۔

    پارلیمانی ماہرین کہتے ہیں کہ ایسے حالات میں تحریک انصاف کے لیے ایوان کو چلانا اور اپوزیشن کی حمایت کے بغیر قانون سازی کرنا مشکل ہو گا۔

    تجزیہ کاروں کے مطابق ایسی صورت حال میں حکومت اتحادی جماعتوں کی ناراضگی مول نہیں لے سکتی اور اسے عددی اکثریت برقرار رکھنے کے لیے اپنی جماعت کے اراکین کی ایوان میں سرگرم شمولیت یقینی بنانا ہو گی۔
     

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.