• This topic has 0 replies, 1 voice, and was last updated 3 months ago by admin.
Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #10167
    admin
    Keymaster

    نکوسیا: مشرقی بحیرہ روم میں کشیدگی کے ایک ایسے وقت میں انتخابات کے دوران اتوار کے روز ترک قبرصی باشندوں نے آزادانہ طور پر دائیں بازو کے قوم پرست اور انقرہ کے حمایت یافتہ ایرسن تاتار کو منتخب کر لیا۔

    سرکاری نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ 60 سالہ تاتار نے صدارتی انتخابات کے دوسرے مرحلے میں حیرت انگیز کامیابی حاصل کی اور  51.7 فیصد ووٹ حاصل کیے۔

    انہوں نے منقسم جزیرے کے جنوب میں یونانی قبرص سے دوبارہ اتحاد کے حامی، ترک قبرص کے موجودہ رہنما مصطفٰی اکنسی کو شکست دی۔

    تاتار کو 67،385 ووٹ ملے ، جبکہ اکانسی کو 62،858 ووٹ ملے۔

    انتخابات کے بعد جاری اپنے پہلے بیان میں تاتار نے کہا کہ وہ یونانی قبرصی عوام کی طرف امن اور دوستی کا ہاتھ بڑھاتے ہیں۔ 

    انہوں نے ترک قبرص کی حمایت کے لئے ان کا شکریہ ادا کیا۔

    تاتار نے یہ بھی کہا کہ وہ “حقائق کی بنیاد پر” کئی دہائیوں تک جاری رہنے والے مسئلے کا حل تلاش کرنے کے لئے یونانی قبرص کے ساتھ مذاکرات کی میز پر بیٹھنے کے لئے تیار ہیں۔

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.