• This topic is empty.
Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #16153
    Syed Muhammad
    Moderator

    قابل بھروسہ دفاعی مصنوعات طیار کرنے والے ملک روس نے اپنا پہلا سنگل انجن والا جیٹ پیش ‏کر دیا۔

    روسی میڈیا کے مطابق روسی صدر ولادیمیر پوتن نے منگل کو سخوئی کے نئے ففتھ جنریشن فائٹر جیٹ ‘چیک میٹ’ کے آزمائشی ماڈل کی رونمائی کی ہے۔

    ماسکو میں یہ سالانہ ایئر شو کا موقع تھا جس میں روس فضائی دفاع کے نئے آلات و مصنوعات پیش کرتا ہے جنھیں ممکنہ دفاعی برآمدات کی نظر سے دیکھا جاتا ہے۔ اس دوران جنگی طیارے چیک میٹ سے متعلق معلومات فراہم کی گئی۔

    اس موقع پر طیارہ ساز کمپنی کے سی ای او نے بریفنگ میں صدر کو بتایا کہ ایک انجن والے ایک ‏جیٹ میں وسیع جنگی صلاحیتیں ہیں جس کی لاگت بھی کم ہے۔

    مستقبل کے تقاضوں اور درپیش چیلنجز کو مدنظر رکھتے ہوئے جدید ٹیکنالوجی سے اس طیارے ‏کو ڈیزائن کیا گیا ہے جسے غیرملکی ڈیمانڈز پر ترمیم کر کے مطلوبہ شکل دی جا سکتی ہے۔

    دستیاب معلومات کے مطابق چیک میٹ ففتھ جنریشن ٹیکنالوجی پر بننے والے اپنے دو انجن والے پیشرو ’سخوئی ایس یو 57‘ سے ہلکا ہے۔ چیک میٹ ایک وقت میں مختلف رینج کے پانچ فضائی میزائل اٹھا سکتا ہے۔

    یہ طیارہ پرواز کے دوران ڈرون لانچ کر سکتا ہے اور اس پر کل 7.5 ٹن کا اسلحہ رکھا جا سکتا ہے۔

    اس طیارے کی پہلی متوقع پرواز 2023 میں ہو سکتی ہے لیکن اس سے پہلے زمینی آزمائش کی ‏جائے گی اور پھر تجرباتی پرواز کے لیے پیش کیا جائے گا۔

    صدر کو بتایا گیا کہ کمپنی 2026 تک سیریل پروڈکشن کا ارادہ بھی رکھتی ہے اور 15 سالوں میں ‏‏300 سنگل لائٹ جیٹ تیار کیے جا سکتے ہیں۔

    ماہرین روسی ساختہ چیک میٹ کو امریکی جنگی طیارے ’ایف 35‘ کا حریف تصور کر رہے ہیں۔ امکان ہے کہ روس اپنا یہ نیا جنگی طیارہ کئی ممالک کو فروخت کرنے کی تیاری کر رہا ہے۔

    چیک میٹ کی تیاری میں روس کے سرکاری دفاعی برآمدات کے ادارے ’روستخ‘ اور یونائیٹڈ ایئر کرافٹ کارپوریشن نے مل کر کام کیا ہے۔

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.