Jirga Pakistan

Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #7916
    M Khan
    Moderator

    جماعتِ اسلامی پاکستان کے سابق امیر سید منور حسن طویل علالت کے بعد کراچی میں انتقال کر گئے ہیں۔ اُن کی عمر 78 برس تھی۔

    سید منور حسن گزشہ تین ہفتے سے کراچی کے ایک اسپتال میں زیرِ علاج تھے جہاں وہ جمعے کو حرکتِ قلب بند ہونے سے جان کی بازی ہار گئے۔

    وہ جماعتِ اسلامی کے چوتھے امیر تھے جنہوں نے 2009 سے 2014 تک جماعتِ اسلامی پاکستان کے سربراہ کی ذمہ داریاں نبھائیں۔

    سید منور حسن نے خرابی صحت کے باعث 2014 میں دوسری مدت کے لیے جماعتِ اسلامی کی امارت کا انتخاب لڑنے سے معذرت کر لی تھی۔

    سید منور حسن پانچ اگست 1941 کو نئی دہلی میں پیدا ہوئے۔ قیامِ پاکستان کے بعد سید منور حسن کا خاندان پہلے لاہور اور پھر کراچی منتقل ہو گیا۔

    اُنہوں نے ابتدائی تعلیم کراچی میں جیکب لائن کے ایک اسکول سے حاصل کی۔ 1963 اور 1966 میں اُنہوں نے جامعہ کراچی سے پہلے عمرانیات اور پھر اسلامیات میں ماسٹرز کیے۔

    سید منور حسن نے بائیں بازو کی طلبہ تنظیم ‘نیشنل اسٹوڈنٹس فیڈریشن’ کے پلیٹ فارم سے اپنی طلبہ سیاست کا آغاز کیا۔ وہ 1959 میں این ایس ایف کراچی کے صدر بھی رہے۔

    بعدازاں وہ جماعت اسلامی کے بانی سید ابو الاعلیٰ مودودی کے نظریات سے متاثر ہو کر اسلامی جمعیت طلبہ میں شامل ہو گئے جس کے وہ ناظمِ اعلٰی بھی رہے۔

    سید منور حسن کو ان کے اندازِ خطابت کی وجہ سے بھی طلبہ اور سیاسی حلقوں میں پسند کیا جاتا تھا۔

    سید منور حسن جنوری 1989 سے نومبر 1991 تک جماعت اسلامی کراچی کے امیر کے منصب پر فائز رہے۔ وہ 1992 میں جماعت اسلامی پاکستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل مقرر ہوئے اور بعد ازاں اس وقت کے امیر قاضی حسین احمد کے ساتھ جماعت کے سیکریٹری جنرل بنے۔ وہ 2009 میں جماعت کا امیر منتخب ہونے تک سیکریٹری جنرل کی ذمہ داریاں نبھاتے رہے۔

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.