Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #9916
    Zaid
    Moderator

    امریکا میں قانون نافذ کرنے والے اداروں نے ریاست مشی گن کی خاتون گورنر کو اغوا کرنے کا منصوبہ ناکام بناتے ہوئے 13 افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔ حکام کے مطابق ملزمان کا تعلق مقامی سفید فام انتہاپسند ملیشیا گروپ سے ہے۔

    ایف بی آئی کے مطابق گروپ نے ڈیموکریٹ پارٹی سے تعلق رکھنے والی گونر گریٹچن وائٹمر کو 3 نومبر کو ہونے والے صدارتی انتخاب سے پہلے اغوا کرنے کی سازش رچائی تھی۔ گریٹچن وائٹمر اکثر و بیشتر ٹرمپ کی تنقید کا نشانہ بنتی رہتی ہیں۔

    مشی گن کی اٹارنی جنرل نے ایک نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ دن رات کی کوششوں سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے افسران، سرکاری عہدیداروں اور شہریوں کی زندگیاں خطرے میں ڈالنے کا وسیع منصوبہ بے نقاب ہوا ہے۔

    مشی گن کے مغربی ضلع کے پراسیکیوٹر اینڈریو برج نے کہا کہ ایف بی آئی کو سوشل میڈیا کے ذریعہ معلوم ہوا کہ لوگوں کا ایک گروپ خون خرابے کے ذریعے مشی گن کی حکومت کے خاتمے پر بات چیت کر رہا ہے۔ ایف بی آئی ایک ماہ تک اس پر تحقیقاتی کرتی رہی۔ جس میں گروپ کے اندر موجود خفیہ ذرائع پر انحصار کیا گیا تھا۔

    گرفتار 13 افراد میں سے 6 ایسے ہیں جن پر الزام ثابت ہوجائے تو ان کو عمرقید ہوسکتی ہے۔ ملزمان کا منصوبہ محض گورنر کے اغوا تک محدود نہیں تھا بلکہ اس دن بم دھماکے اور مختلف مقامات پر بم نصب کرنے کا پلان تھا اور اس کے لیے مخصوص مقامات کا معائنہ بھی کیا گیا تھا۔

     قانون نافذ کرنے والے اداروں نے سازشیوں کو اس مرحلے میں گرفتار کیا ہے کہ جب وہ اپنے منصوبے پر عمل درآمد کرنے کے لیے فنڈز جمع کرنے میں مصروف تھے۔ ان 6 افراد کے علاوہ باقی ماندہ 7 افراد بھی اس ملیشیا کا حصہ ہیں اور ان پر بھی سازش کا حصہ ہونے کا شبہ ہے۔

     

    مکمل تقریر: گورنر گریچین وائٹمر نے اغواء پلاٹ کے بارے میں پریس کانفرنس کا انعقاد کیا

     

    This article originally appeared on Samaa TV

    Video courtesy MLive

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.