Jirga Pakistan

  • This topic has 0 replies, 1 voice, and was last updated 1 week ago by admin.
Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #8476
    admin
    Keymaster

    ہندوستان ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق برطانوی نیشنل کرائم ایجنسی نے ملک ریاض کے خلاف تحقیقات کے دوران  برطانیہ میں ضبط کیے گئے 190 ملین پاؤنڈ پاکستان کو واپس کر دیے ہیں۔ بر طانوی حکام نے بتایا کہ اسی طرح برطانیہ نے لاکھوں پاؤنڈز کو سال 2019-20 میں دوسرے ترقی پذیر ممالک کو بھی واپس کیا ہے ۔

    یہ رقم بین الاقوامی بدعنوانی اور رشوت ستانی کی تحقیقات کا نتیجہ ہے۔ نیشنل کرائم ایجنسی (این سی اے) کے بین الاقوامی بدعنوانی یونٹ کے ذریعہ اس سال کے دوران پہلے سے کہیں زیادہ افراد پر فرد جرم عائد کی گئی ، جو ملک میں بڑے اوورسیز ترقیاتی منصوبوں میں مجرمانہ نقد رقم کی فراہمی سے منسلک ہیں۔

    کروڑوں پاؤنڈز سے بنائی گئی ملک ریاض کی جائیدادوں کو برطانیہ میں تحقیقات کا سامنا کرنا پڑا۔ برطانوی حکومت نے تحقیقات کے دوران ناجائز آمدن کے ثبوت ملنے کے بعد ملک ریاض کے اکاؤنٹس اور جائیدادیں منجمد کر دیے تھے۔

    دسمبر 2019 میں ، نیشنل کرائم ایجنسی نے ملک ریاض سے متعلق سول تحقیقات کے بعد 190 ملین ڈالر کی سول سیٹلمنٹ پر اتفاق کیا تھا، ملک ریاض کا شمار پاکستان میں نجی شعبے کے سب سے بڑے کارپوریٹ تاجروں میں ہوتا ہے، اس معاملے میں زیادہ تر منجمد فنڈز اب پاکستان میں واپس بھیج دیئے گئے ہیں۔نیشنل کرائم ایجنسی سے ملک ریاض کی سیٹلمنٹ کا آغاز اگست 2019 میں اکاؤنٹ منجمد کرنے کے آٹھ احکامات نافذ کرنے کے بعد کیا گیا تھا۔

    یاد رہے کہ برطانوی حکومت نے دیگر ممالک کے شہریوں کی جانب سے ملک میں خفیہ یا ناجائز زرائع آمد سے بنائے گئے اثاثوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کر رکھا ہے۔

     

     
     

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.