Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #7798
    Syed Muhammad
    Moderator

    نیپالی پارلیمان کے ایوان بالا نے بھارت کے زیر انتظام اراضی سمیت ملک کے لئے نئے نقشے کی منظوری دی ہے اور یہ منظوری ایسے قضیہ کے دوران ہوئی ہے جس سے جنوبی ایشیائی ممالک کے درمیان تعلقات کشیدہ ہوئے ہیں۔

    ایوان کے چیئرمین گنیشن پرسادTimilsinaنے کہا ہے کہ59 اراکین پر مشتمل قومی اسمبلی یا ایوان بالا نے اس آئینی ترمیم کے حق میں57 ووٹوں سے منظوری دی جبکہ مخالفت میں کوئی ووٹ نہیں پڑا اور پرانا نقشہ تبدیل کر دیا گیا۔

    ان ممالک کے درمیان تازہ سرحدی تنازعہ بھارت کی جانب سے گزشتہ مہینے ہمالیہ رابطہ سڑک کے افتتاح کے بعد شروع ہوا جو ایک متنازعہ علاقے میں تعمیر کیا گیا یہ تبت اور چین کے تزویراتی سنگم پر واقع ہے۔

    بھارت اراضی کے ایک حصے بشمول لمپی یادورا لپولیک اور شمالی مغرب میں کالا پانی کے علاقوں کا انتظام سنبھالے ہوئے ہے۔

    بھارتی میڈیا نے نیپال کے خلاف نئے سرے سے منفی پراپیگنڈہ شروع کر دیا ہے۔
     

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.