Viewing 1 post (of 1 total)

  • Author
    Posts
  • #9927
    Zaid
    Moderator

    پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی نے چینی ایپلی کیشن ٹک ٹاک پر پابندی عائد کردی۔ 

    جمعہ کو پی ٹی اے کی جانب سے جاری اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ ویڈیو شیئرنگ ایپ ٹاک ٹاک پر ‘غیر اخلاقی اور غیرمہذب’ مواد کے خلاف عوام کی بڑھتی ہوئی شکایات کو مدنظر رکھتے ہوئے ٹاک ٹاک پر پابندی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

    اعلامیہ کے مطابق عوام کی شکایات اور ٹک ٹاک پر موجود مواد کا معائنہ کرنے کے بعد اس کے حکام کو ایک نوٹس بھیج کر ہدایت کی گئی کہ غیرقانونی مواد کی روک تھام اور اپنے پلیٹ فارم سے ہٹانے کیلئے فعال طریقہ کار متعارف کیا جائے مگر ٹاک ٹاک نے ان ہدایات پر عمل نہیں کیا جس کے باعث پاکستان میں ٹک ٹاک بلاک کرنے کا حکم دیا گیا۔

    پاکستان ٹیلی کمیونکیشن اتھارٹی نے ٹک ٹوک کو اس پابندی سے متعلق مطلع کرتے ہوئے یہ بھی باور کروایا ہے کہ اس معاملے پر بات چیت کیلئے تیار ہے۔ اگر ٹک ٹاک غیرقانونی مواد کو ہٹانے سے متعلق نظام متعارف کرواتا ہے تو پابندی کے فیصلے پر نظرثانی کی جائے گی۔

    ٹک ٹاک ایک چینی کمپنی Btye Dance کی ملکیت ہے اور چین میں ایک اور نام سے ٹک ٹاک جیسی ایپلی کیشن بھی یہی کمپنی چلاتی ہے۔ ٹک ٹاک کو 2017 میں لانچ کیا گیا اور اس نے بہت کم وقت میں دنیا بھر سے کروڑوں نوجوانوں کو اپنی جانب راغب کیا۔ اس کی تیزرفتار مقبولیت کے باعث امریکی سوشل میڈیا یعنی فیس بک اور اسنیپ چیٹ اس کو اپنا حریف سمجھنے لگے۔

    امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹک ٹاک کو نیشنل سیکیورٹی کیلئے خطرہ قرار دیتے ہوئے پابندی عائد کرنے کی دھمکی دی مگر بعد میں اسے امریکی کمپنیوں کو فروخت کرنے کی شرط پر چلانے کی مہلت دی۔ اس دوران ایک امریکی کمپنی کو ٹک ٹاک میں حصہ دار بنایاکر پابندی سے بچایا گیا۔

    This article originally appeared on Samaa TV

Viewing 1 post (of 1 total)
  • You must be logged in to reply to this topic.