ستارہء سحری ہم کلام کب سے ہے ہارون الرشید   اللہ کا وعدہ یہ ہے کہ خلوص اور حکمت کبھی پسپا نہیں ہوتے۔ پھر یہ کہ راہِ محبت میں پہلا قدم ہی شہادت کا قدم ہوتاہے۔ کہاں گئے شب فرقت کے جاگنے والے ستارہء سحری ہم کلام کب سے ہےContinue Reading

قصور میرا ہے یا کہ تیرا ہارون الرشید   سرخرو وہی ہوتے ہیں، عزم و ہمت کے علاوہ جو تدبر سے آشنا ہوں، ریاضت کر سکیں، خوئے انتقام سے اوپر اٹھ سکیں۔ عصرِ رواں کے تقاضوں کا ادراک رکھتے ہوں۔ اقبال کی نظم کا عنوان ہے زمانہ اور اس کاContinue Reading