ستارہء سحری ہم کلام کب سے ہے ہارون الرشید   اللہ کا وعدہ یہ ہے کہ خلوص اور حکمت کبھی پسپا نہیں ہوتے۔ پھر یہ کہ راہِ محبت میں پہلا قدم ہی شہادت کا قدم ہوتاہے۔ کہاں گئے شب فرقت کے جاگنے والے ستارہء سحری ہم کلام کب سے ہےContinue Reading

قصور میرا ہے یا کہ تیرا ہارون الرشید   سرخرو وہی ہوتے ہیں، عزم و ہمت کے علاوہ جو تدبر سے آشنا ہوں، ریاضت کر سکیں، خوئے انتقام سے اوپر اٹھ سکیں۔ عصرِ رواں کے تقاضوں کا ادراک رکھتے ہوں۔ اقبال کی نظم کا عنوان ہے زمانہ اور اس کاContinue Reading

قرآنِ کریم ہارون الرشید   توحید، رسالت اور قرآنِ کریم ہی ہمارا کل اثاثہ ہے۔ اس سے بے نیازی کا سبق دینے والے، اے اس سے بے نیازی کا سبق دینے والے! خوابوں اور خیالوں میں آدمی جینے لگتاہے تو ایسی بات بھی کہہ دیتاہے، زندگی کی سچائیوں سے جسContinue Reading

کبھی بحیلۂ مذہب، کبھی بنامِ وطن ہارون الرشید   تعلیم و تربیت کی ضرورت ہوتی ہے، معاشروں کو تعلیم و تربیت کی، ورنہ وہی ریوڑ کے ریوڑ۔ صدیوں پہلے جو کبھی بادشاہوں اور پادریوں کا مارایورپ تھا، جو آج ہم ہیں۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے، کورونا کے باب میں اہلِContinue Reading

[2] قدیم یاد نئے مسکنوں سے پیدا ہو ہارون الرشید   ڈرامہ تو محض ایک علامت ہے۔ ابھی بہت کچھ رونما ہونا ہے۔ بہت سے خیرہ کن واقعات۔ فروغِ اسمِ محمدؐ ہو بستیوں میں منیرؔ قدیم یاد نئے مسکنوں سے پیدا ہو ترک ڈرامہ اب محض ایک ڈرامہ نہیں بلکہContinue Reading

وزیر اعظم سے ایک سوال ہارون الرشید   “عمران خان کہا کرتے تھے کہ وہ اقتدار میں آکر سڑکوں، پلوں، انڈر پاسوں کی بجائے تعلیم اور صحت کے شعبوں میں انسانوں پر سرمایہ کاری کریں گے۔ کیا یہی وہ سرمایہ کاری ہے؟ میں یہ نہیں کہتا کہ تحریک انصاف کیContinue Reading

ایں خیال است و محال است و جنوں ہارون الرشید   واقعہ یہ ہے کہ بہت پہلے ہمارے ہیرو نے ہتھیار ڈال دیے تھے۔ شکست میدانِ جنگ میں بعد ازاں واقعہ ہوتی ہے۔ دل کے دیار میں بہت پہلے۔ باتیں جتنی مرضی بنائے، اپنے دل میں وہ ہار چکا ہے۔Continue Reading

اپاہج ہارون الرشید   خواجہ سعد رفیق نے ٹھیک کہا: سیاسی جماعتیں کمزور، محتاج اور پست و پامال رہیں گی، جب تک وہ اداروں میں نہیں ڈھل جاتیں۔ بڑھتے بڑھتے سیاست میں فوج کا عمل دخل بہت بڑھ گیا۔ تازہ ترین مثال وزارتِ اطلاعات کی ہے، جو ایک جنرل کیContinue Reading

یا للعجب، یا للعجب ہارون الرشید   مولانا کی طرف سے رضاکارانہ معافی اور اخبار نویسوں کی طرف سے معقول رویے کے باوجود سوشل میڈیا پر ان کے مریدوں نے طوفان اٹھا رکھا ہے۔ ویسی ہی بدتمیزی اور ویسی ہی دشنام طرازی، جو سیاسی کارندوں کا دستور ہے۔۔۔ اور وہContinue Reading

تری طلب، تجھے پانے کی آرزو، ترا غم ہارون الرشید   دعا ہے سو جاری رکھنی چاہئیے، صدقہ ہے، اللہ کی بارگاہ میں جو اپنے رفتگاں کی نذر کیا جا سکتاہے۔ جانے ملاقات کب ہوگی؟ طلوعِ مہر، شگفتِ سحر، سیاہیء شب تری طلب، تجھے پانے کی آرزو، ترا غم عصرِContinue Reading

بازار سے گزرا ہوں، خریدار نہیں ہوں ہارون الرشید   سعید اظہر برعکس تھے۔ لا تعلق، بے نیاز اور کبھی کبھی تو بے زار بھی۔ ان کی کہانی کا اگر کوئی عنوان ہو سکتاہے تو یہ کہ بازار سے گزرا ہوں، خریدار نہیں ہوں۔ سعید اظہر کی کہانی بیچ میںContinue Reading

لیڈر لوگ ہارون الرشید   تاریخ یہ کہتی ہے کہ بہترین صلاحیت آزادی میں بروئے کار آیا کرتی ہے، تقلید یا غلامی میں نہیں۔ الحذر، ان لیڈروں سے سو بار الحذر، جوہمارے اعمال نے ہم پر مسلط کر دئیے۔ یارب ان سے ہمیں نجات دے۔ دہراتا ہوں کہ عقل کبھیContinue Reading

لاڈلا (پہلی قسط) ہارون الرشید   ہر آدمی مختلف ہوتا ہے۔ صرف شکل و صورت، مزاج اور عادات و اطوار ہی میں نہیں بلکہ اپنے باطن میں بھی۔ شطرنج کی بساط پر مہروں کی تعداد مختصر ہوتی ہے لیکن چالیں ایک ارب سے زیادہ۔ پروردگار نے زندگی کو ایک خیرہContinue Reading

ہمت کی کوتاہی ہارون الرشید   مایوسی اورترجیحات کے تعین سے گریز، پہل کاری اور عزم و حوصلے سے محرومی۔ سول سروس اور سیاست کا فرسودہ ڈھانچہ، چنانچہ فلاکت اور محرومی۔ نہ شاخِ گل ہی اونچی ہے نہ دیوار چمن بلبل تری ہمت کی کوتاہی تری قسمت کی پستی ہےContinue Reading

متوازی وزیر اعظم ہارون الرشید   آرزوئیں تو بادشاہوں کی بھی پروان نہیں چڑھتیں، ضرورتیں فقیروں کی بھی پوری ہو جاتی ہیں۔ خدا کی بستی دکاں نہیں ہے۔ جہانگیر ترین کا جرم وہ نہیں، جو اچھالا جا رہا ہے۔ فرانزک رپورٹ سے کھل جائے گا کہ زرِ اعانت میں اسContinue Reading

گھنٹی کون باندھے گا؟ ہارون الرشید   وزیرِ اعظم کے ہاتھ پاؤں ہی دھوکہ دہی پر تلے ہیں توبلّی کے گلے میں گھنٹی کون باندھے گا؟ وزیرِ اعظم نے ٹھیک کہا:ابھی کچھ دن ملک کو تنے ہوئے رسّے پر چلنا ہے۔ اس امتحان میں سب سے زیادہ اہمیت توازن کیContinue Reading

ترقی ہارون الرشید   ساری کی ساری سائنسی ترقی دھری کی دھری رہ گئی اور پرندوں کی طرح آدمی گھروں کے پنجروں میں قید ہیں۔ کیا انسان کی آنکھ کھلے گی یا بگٹٹ وہ تباہی کی طرف بھاگتا چلا جائے گا؟ روز افزوں ترقی بجا مگر آدمیت بھی کوئی چیزContinue Reading